بجلی مہنگی ، صارفین پر 16ارب روپے کا اضافی بوجھ ، غریبوں میں تشویش

بجلی مہنگی ، صارفین پر 16ارب روپے کا اضافی بوجھ ، غریبوں میں تشویش

ملتان ( سٹاف رپورٹر) نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی نیپرا کی جانب سے بجلی کی قیمتوں میں ایک روپے16پیسے فی یونٹ اضافے سے بجلی صارفین پر 16ارب روپے کا اضافی بوجھ ڈالنے پر مہنگائی کے ہاتھوں مارے عوام میں اضطراب کی لہر دوڑ گئی ہے اور انہو ں نے اسے ظلم پر ظلم قرار دیا ہے۔ بجلی کی قیمت میں اضافہ کے الیکٹرک کے علاوہ میپکو سمیت تمام بجلی کی تقسیم کار کمپنیوں کے لئے ہے۔ سنٹرل پاور پرچیزنگ ایجنسی نے اگست کی فیول ایڈجسٹمنٹ(بقیہ نمبر11صفحہ12پر )

کی مد میں فی یونٹ بجلی ڈیڑھ روپے مہنگی کرنے کی درخواست کی تھی تاہم نیپرا نے ایک روپے 16پیسے مہنگی کرنے کی منظوری دی ہے ۔نیپرا کے مطابق اگست میں بجلی کی پیداواری لاگت 5روپے 91پیسے فی یونٹ رہی جبکہ صارفین سے اگست میں 4روپے 75پیسے وصول کئے گئے ۔ صارفین پر آئندہ ماہ 16ارب روپے کا اضافی بوجھ پڑے گا ۔صارفین نے اس پر شدید احتجاج کرتے ہوئے کہا ہے کہ بجلی کمپنیوں میں ہر ماہ اربوں روپے کی بجلی چوری ہو رہی ہے ۔ اس کا نقصان بے قصور صارفین پر ناجائز ایوریج بلوں کے ذریعے پورا کیاجاتا ہے۔اس کے علاوہ پاور سیکٹر میں بے تحاشا کرپشن ہے جبکہ فضول اخراجات بھی ہر زبان زد عام ہیں ۔ اس صورتحال میں بجلی کی قیمتیں بڑھانے کی بجائے بجلی چوری ‘ کرپشن اور فضول اخراجات پر قابو پانا چاہئیے ۔ تحریک انصاف کی حکومت سے توقعات وابستہ تھیں مگر انہوں نے اقتدار میں آتے ہی مہنگائی کے پہاڑ تو ڑ دئیے ہیں ۔ ہر چیز مہنگی ہو گئی ہے۔ صارفین نے وزیر اعظم عمران خان سے مطالبہ کیاہے کہ بجلی کی قیمتیں بڑھانے کی بجائے کم کی جائیں ۔جتنی بجلی کی قیمت ہوتی ہے ۔ اتنے ہی نت نئے ٹیکسز ‘ سرچارج عائد کر دئیے جاتے ہیں ۔ یہ کم کرکے عوام کو ریلیف دیاجائے ۔

بوجھ

مزید : ملتان صفحہ آخر