سٹار ٹیچرز ایوارڈ ، فہرستوں کی تیاری میں ہیرا پھیری کا انکشاف ، قابل اساتذہ میں تشویش

سٹار ٹیچرز ایوارڈ ، فہرستوں کی تیاری میں ہیرا پھیری کا انکشاف ، قابل اساتذہ ...

ملتان(خصوصی رپورٹر) حکومت نے ٹیچرز کے عالمی دن کے موقع پر اچھی کارکردگی والے اساتذہ کو سٹارٹیچر ایوارڈ دینے کا فیصلہ کیا تھا مگر جو فہرستیں تیار کی جارہی ہیں ان میں ان سکولوں کونوازنے کی کوشش کی جارہی ہے جن کی کارکردگی ناقص ہے ان کے سربراہوں کے خلاف غیر حاضری پر کارروائی ہوچکی ہے، محکمہ سکولز کے آئی ٹی ڈیپارٹمنٹ کی طرف سے جو فہرست سی ای او کو ارسال کی گئی ان میں ملتان شہر کے بڑے سکول جن میں 15 سو سے 2ہزار تک بچے(بقیہ نمبر18صفحہ12پر )

زیر تعلیم ہیں نظر انداز کردیا گیا ہے جبکہ مضافات میں قائم سکولوں کو چن لیا گیا ہے جو فہرست ارسال کی گئی ان میں نورجہان سکول اسماعیل آباد ملتان، ہائی سکول لاڑ، سکندر آباد، قادر پور راں ، شجاع آباد اور جلالپور پیر والا شامل ہیں ، ذرائع کا کہنا ہے کہ نورجہان سکول کی پرنسپل مسلسل غیر حاضر رہتی ہیں ان کے خلاف سابق سی ای او رئیس اعوان نے کئی بار کارروائی کی مگر بااثر ہونے کی وجہ سے بچ جاتی ہیں، لاڑمیں وزیر اعلیٰ روڑ میپ کے مطابق تعلیم نہیں دی جارہی، جلالپور پیر والا سکول میں 14سو بچوں کا داخلہ ظاہر کیا گیا جبکہ موقع پر چیک کیا گیا تو ان کی تعداد 4سو تھی جس پر کارروائی کا عمل سست روی سے جاری ہے ، ان سکولوں کے سربراہوں نے میٹرک کے نتائج کے بنیاد پر کارکردگی کا پیمانہ ترتیب دلایا جبکہ یہ سربراہ میٹرک کا سنٹر بھی سکول میں بنواتے ہیں جہاں نقل کھلے عام چلتی ہے ان کے طلبا کی تعداد بھی تھوڑی ہوتی ہے شہر کے سکولوں کے اساتذہ نے اس پر شدید احتجاج کرتے ہوئے کہا ہے کہ محنتی اساتذہ کے ساتھ زیادتی ہے ، اگر ایوارڈ غیرحاضر رہنے، اورگھر بیٹھے تنخواہ لینے والے ٹیچر کو ملنا ہے ، توتما م ٹیچر کام چھوڑ دیتے ہیں، اگر ان سکولوں کو ایوارڈ دیا گیا تو نقل کو فروغ ملے گا محکمہ سکولز کے حکام ، سیکرٹری سکولز اس کو نوٹس لیں اورمیرٹ پر ایوارڈ کی نامزدگی کریں۔

سٹار ٹیچرز

مزید : ملتان صفحہ آخر