قصبہ گجرات ، سکول وین میں سلنڈر دھماکہ ، 3بچے جھلس کر جاں بحق ، 10زخمی

قصبہ گجرات ، سکول وین میں سلنڈر دھماکہ ، 3بچے جھلس کر جاں بحق ، 10زخمی

ملتان ( سٹاف رپورٹر)پرائیویٹ سکول کی وین میں سی این جی سلنڈر کا دھماکا ہونے کے باعث 3 بچے جاں بحق اور دس بچے زخمی ہو گئے ہیں.تفصیلات کے مطابق تھانہ چوک قریشی کے علاقے میں قصبہ گجرات کے نزدیک نجی سکول لیڈز کی مسافر وین میں بچے اور ٹیچرز سوار ہوئیں تو وین میں سی این جی سلنڈر سے گیس خارج ہو رہی تھی،ڈرائیور نے وین کا دروازہ بند کیا تو سی این جی سلنڈر دھماکے سے پھٹ گیا اور وین میں آگ لگ گئی،اس دوران مقامی افراد بھی موقع پر آگئے اور اپنی مدد آپ کے تحت بچوں اور ٹیچرز کو وین سے نکالنے کے لیے کوششیں کیں،پولیس کے مطابق مسافر وین میں ٹیچرز سمیت 26 افراد سوار تھے. اس دوران وین میں آگے بیٹھنے والے بچوں اور ٹیچرز کو تو وین سے بحفاظت باہر نکال لیا گیا مگر وین میں پیچھے بیٹھے رہ جانے والے بچے وین سے نہ نکل سکے،اور آگ کی زد میں حنان ‘حماد اور زین جھلس کر موقع پر ہی جاں بحق ہو گئے. جبکہ دس بچے زخمی ہوگئے. واقعے کی اطلاع ملتے ہی پولیس کی بھاری نفری اور ریسکیو 1122 موقع پر پہنچ گئی،ریسکیو نے وین میں لگنے والی آگ پر قابو پانے کے بعد بچوں کی لاشوں کو وین سے باہر نکالا.زخمی ہونے والے بچوں میں سے عافیہ،زرینہ،روبینہ،عبیرہ اور فاطمہ کو موقع پر ہی ریسکیو 1122 نے طبی امداد فراہم کردی جبکہ عزیر،طلحہ،شین،زینب اور عبداللہ کو ڈسٹرکٹ ہیڈکوارٹر ہسپتال مظفرگڑھ منتقل کردیا گیا.شدید زخمی ہونے والے 3 بچوں کو نشتر ہسپتال ملتان کے برن یونٹ منتقل کردیا گیا ہے. واقعے کے بعد پولیس کی فرانزک ٹیم بھی موقع پر پہنچ گئی اور موقع سے شواہد جمع کیے.ڈی ایس پی صدر ثناء اللہ کے مطابق حادثے کے بعد مسافر وین کا ڈرائیور اور پرائیویٹ سکول کی انتظامیہ موقع سے فرار ہوگی.پولیس نے مسافر وین کے مالک کو گرفتار کرلیا ہے. ڈی ایس پی صدر کے مطابق واقعہ کا مقدمہ درج کیا جارہا ہے،دوسری جانب ڈسٹرکٹ ایمرجنسی آفیسر ڈاکٹر ارشاد الحق کے مطابق جھلس کر زخمی ہونے والے دو بچوں کے جسم کے 30 فیصد سے زیادہ حصہ متاثر ہوا جن کو نشتر ہسپتال ملتان کے برن یونٹ میں منتقل کیا گیا ہے،جبکہ تھانہ قریشی کے علاقے سکول وین میں آگ لگنے کا واقعہ پر اسسٹنٹ کمشنر مظفرگڑھ اشرف گجر بھی موقع پر پہنچ گئے. ایس ایچ او چوک قریشی کلیم اللہ گادھی موقع پر پہنچے. انہوں نے اور ساتھ کام کرنے والے مزدور اپنی جان کی پرواہ کیے بغیر آگ میں کود گئے اور 10 بچوں کو زندہ نکال لیا، جبکہ 2بچے جانبر نہ ہوسکے، اسی اطلاع پر ڈی ایس پی صدر سرکل ثنااللہ خان ,ان کے بعد ایس پی انوسٹی گیشن مصطفیٰ پہوڑ، ڈی ایس پی ٹریفک زبیر بنگش بھی جائے موقع پر پہنچے، جبکہ ڈی ایس پی ہیڈ کوارٹرز مقبول حسین زخمی بچوں کے ساتھ ضلعی ہسپتال مظفرگڑھ موجود ہیں، پولیس کے مطابق باقی ذمہ دارا بھی جلد ہی قانون کی گرفت میں ہونگے، علاوہ ازیں سانحہ کی خبر سن کر ارد گرد کے ہزاروں لوگ جائے حادثہ پرپہنچ گئے جبکہ والدین پر وین میں آگ لگنے کی خبر بجلی بن کر گری۔دریں اثناء سکول وین میں آگ لگنے کے واقعہ کا وزیر اعلیٰ پنجاب نے نوٹس لے لیا ہے واقعہ کی انکوائری کیلئے کمیٹی بنا دی گئی ہے جو 12گھنٹے میں رپورٹ پیش کرے گی جان بحق ہونے والے بچوں کی تجہیز تدفین کیلئے انتظامات ضلعی انتظامیہ کی طرف سے کئے گئے ہیں دومتاثرہ بچے ڈی ایچ کیو ہسپتال میں زیر علاج ہیں جن کی نگہداشت کیلئے اے سی مظفرگڑھ اشر ف گجر کی ڈیوٹی لگائی گئی ہے نشتر ہسپتال میں زیر علاجبچوں کے نگہداشت کیلئے اے سی کوٹ ادو محمد سیف کی ڈیوٹی لگائی گئی ہے معمولی نوعیت کے زخمی 6بچوں کو طبی امداد فراہم کر کے ان کے گھر منتقل کردیا گیا ہے ڈپٹی کمشنر قیصر سلیم کے مطابق زخمی ہونے والے بچوں کے علاج معالجے کے تمام اخراجات ضلعی انتظامیہ فراہم کرے گی۔ ادھر قصبہ گجرات روڈ کرم. داد قریشی دی لیڈز سکول کی ویگن نمبر.(بی ایم اے 287) سکول گیٹ پر طالب علم. سوار کر چکی تھی مذکورہ ویگن مں 2 عدد سی این جی سلنڈر نصب تھے ڈرائیور ویگن میں بیٹھ کر جس کا ڈرائیور کو علم بھی تھا مجرمانہ غفلت عادت کے طور پر فوراً سگریٹ کے لئے ماچس دیا سلائی جلائی بس گیس سے بھری ویگن پوری آگ کے شعلوں سے بھڑک اٹھی بڑی مشکل سے کچھ گیٹ کے نزدیک بچوں نے گیٹ کھول کر زخمی حالت میں جان بچائی۔ اس میں زیادہ تر ذمہ داری ٹریفک پولیس کی ہے عوامی سطح پر ٹریفک پولیس کو ذمہ دار تصور کرنے پر زور دیا جارہا ہے سارا دن ٹریفک پولیس ناجائز جرمانے اور بھتہ خوری میں لگی رہتی ہے قوانین اور ضوابط کی دھچیاں اڑائی ج1ا رہی ہیں۔

سلنڈر دھماکہ

Back to Conv

مزید : کراچی صفحہ اول