اٹلی پہنچنے والے تارکین وطن کی تعداد 60 فیصد کم ہو گئی ہے: یورپی یونین

اٹلی پہنچنے والے تارکین وطن کی تعداد 60 فیصد کم ہو گئی ہے: یورپی یونین
اٹلی پہنچنے والے تارکین وطن کی تعداد 60 فیصد کم ہو گئی ہے: یورپی یونین

  

برسلز(این این آئی)یورپی یونین کے شماریات کے مرکزی ادارے یورو سٹیٹ نے بتایا ہے کہ رواں برس کی دوسری سہ ماہی میں اٹلی پہنچنے والے مہاجرین کی تعداد میں گزشتہ سال کے اسی دورانیے کی نسبت 60 فیصد تک کمی واقع ہوئی ہے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق مہاجرین کے حوالے سے خبریں فراہم کرنے والے یورپی خبر رساں ادارے انفو مائیگرنٹس نے بتایاکہ یورو سٹیٹ کے اعداد وشمار کے رْو سے یورپ پہنچنے والے تارکین وطن کی تعداد میں مجموعی طور پر کمی واقع ہوئی ہے۔ یورپ میں امسال دوسری سہ ماہی کے دورانیے میں پناہ گزینوں کی آمد میں سن 2017 کی اسی مدت کے مقابلے میں اوسطا12فیصد کمی ہوئی لیکن 2018 کی پہلی سہ ماہی میں اس شرح میں 4 فیصد اضافہ بھی دیکھنے میں آیا تھا۔ سپین اور یونان میں البتہ تارکین وطن کی آمد کی شرح زیادہ رہی۔یہ بات درست طور پر کہی جا سکتی ہے کہ سن 2018 کی دوسری سہ ماہی میں اٹلی نے سالانہ بنیادوں پر گزشتہ سہ ماہی کی نسبت 4 ہزار155 کم مہاجرین کو رجسٹر کیا۔

یورو سٹیٹ نے یہ بات بھی زور دیتے ہوئے کہی کہ سن 2018 کی دوسری سہ ماہی میں یورپی یونین کی ریاستوں میں پہنچنے والے تارکین وطن کی تعداد قریب ایک لاکھ37 ہزار تھی۔ یہ تعداد تقریبا اتنی ہی ہے جو سن 2015 اور سن 2016 میں مہاجرین کا بحران شروع سے قبل سن 2014 میں تھی۔علاوہ ازیں یورپی یونین کے شماریاتی ادارے کے مطابق رواں برس کی دوسری سہ ماہی میں جرمنی میں 33,700 افراد نے پناہ کی درخواستیں جمع کرائیں۔ فرانس میں ایسی درخواستوں کی تعداد 26,100 جبکہ یونان میں 16,300 رہی۔

مزید : بین الاقوامی