گھریلو ملازمہ نے 3 سالہ بچے کو قتل کرکے لاش کو واشنگ مشین میں ڈال کر دھودیا

گھریلو ملازمہ نے 3 سالہ بچے کو قتل کرکے لاش کو واشنگ مشین میں ڈال کر دھودیا
گھریلو ملازمہ نے 3 سالہ بچے کو قتل کرکے لاش کو واشنگ مشین میں ڈال کر دھودیا

  

کوئٹہ (ڈیلی پاکستان آن لائن) بلوچستان کے صوبائی دارالحکومت کوئٹہ میں 3 سالہ بچے کو قتل کرنے کے بعد واشنگ مشین میں ڈال کر دھونے والی گھریلو ملازمہ کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔

نجی ٹی وی جیو نیوز کے مطابق 12 ستمبر کو گھریلو ملازمہ بچے کو قتل کرنے کے بعد کوئٹہ سے اپنے آبائی علاقے لہڑی فرار ہوگئی تھی۔ ملزمہ کو اس کے رشتے داروں کے ذریعے واپس کوئٹہ بلایا گیا اور راستے میں ہی کولپور سے گرفتار کرلیا گیا ۔

ملزمہ نے دوران تفتیش انکشاف کیا کہ 12 ستمبر کو 3 سالہ سعد شاہ ٹیبلٹ کے ساتھ کھیل رہا تھا، اس نے بچے سے ٹیبلٹ چھینا تو وہ رونے لگا اور چپ ہی نہیں ہوا۔ ملازمہ کے مطابق اس نے بچے کو خاموش کرنے کیلئے اس کا گلا دبا دیا جس سے اس کی موت ہوگئی، بعد ازاں اس نے بچے کی لاش کو واشنگ مشین میں سرف ڈال کر دھودیا۔

ملزمہ نے دوران تفتیش یہ بھی انکشاف کیا کہ جس وقت اس نے قتل کیا تو اس وقت اس کی بھانجی بھی اس کے ساتھ تھی۔ دونوں نے بچے کی لاش چھوڑ کر گھر سے فرار ہوتے ہوئے زیورات وغیرہ شاپر میں ڈالے اور وہاں سے نکل گئے لیکن مقتول بچے کے رشتے داروں کے اکٹھے ہونے پر وہ شاپر پھینک کر آبائی علاقے فرار ہوگئیں۔ ملزمہ کے بیان کی روشنی میں پولیس نے اس کی بھانجی کی تلاش بھی شروع کردی ہے۔

مزید :

علاقائی -بلوچستان -کوئٹہ -