”ایک عدالتی فیصلہ آگیا اب کون کیا کہتا ہے معنی نہیں رکھتا“ شہباز شریف کی گرفتاری پر شہزاد اکبر کا رد عمل

”ایک عدالتی فیصلہ آگیا اب کون کیا کہتا ہے معنی نہیں رکھتا“ شہباز شریف کی ...
”ایک عدالتی فیصلہ آگیا اب کون کیا کہتا ہے معنی نہیں رکھتا“ شہباز شریف کی گرفتاری پر شہزاد اکبر کا رد عمل

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیراعظم عمران خان کے مشیر داخلہ و احتساب شہزا د اکبر نے کہاہے کہ معاملہ صرف بچوں کا نہیں، ریفرنس میں شہباز شریف کے منی لانڈرنگ میں ملوث ہونے، اکاونٹس سے فائدہ اٹھانے کے براہ راست الزامات ہیں۔

انہوں نے کہا کہ شواہد ہونے کے بنیا دپر ہی لاہور ہائی کورٹ نے شہباز شریف کی ضمانت قبل از گرفتار ی مسترد کی، ایک عدالتی فیصلہ آگیا اب کون کیا کہتا ہے معنی نہیں رکھتا، عدالتی معاملات کو سیاسی رنگ دینا توہین عدالت ہے۔شہزاد اکبر کا کہنا تھا کہ شہبازشریف عدالتوں کے سوالوں کے جوابات نہ دے سکے،اسی لیے ان کی گرفتاری ہوئی، جب عدالتیں ان کے حق میں فیصلے دیں تو سراہتے ہیں اگر فیصلہ خلاف آئے تو عدالتوں کو ہدف تنقید بناتے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ 16رکنی گینگ جو منی لانڈرنگ میں ملوث ہے ، شہبازشریف اس گروہ کا سرغنہ ہے،شہبازشریف علی بابا 16چورو دیگر ہیں، جن میں سے چار افراد نے اقبال جرم بھی کر لیا ہے۔ شہبازشریف ملازمین کے نام پر بے نامی کمپنیاں بنانے کا جواب دیں۔ انہوںنے کہا کہ شہبازشریف بتائیں کے ان کے بیوی اور بچوں کے نام پر منظورپاپڑ والے اورریڑھی بانوں نے پیسے کیسے بھیجے؟18000روپے کے ملازم راشد نے شہبازشریف کی بیوی اور بچوں کے نام پرکروڑوں روپے کی ٹرانزیکشن کیں۔ انہوںنے مزید کہا کہ یہ لوگ منی لانڈرنگ اور کرپشن میں ملوث ہیں، ساری دنیا جانتی ہے کہ نوازشریف کو ان کی کرتوتوں کی وجہ سے نااہل قرار دیا گیا، مریم نواز نے اپنے چچاشہبازشریف کی سیاست کا باب بند کردیا۔

مزید :

قومی -