والدہ کو ہسپتال لے جانے کے لیے چھٹی نہ ملنےپر پولیس کانسٹیبل نے  نوکری سے استعفی دیدیا

والدہ کو ہسپتال لے جانے کے لیے چھٹی نہ ملنےپر پولیس کانسٹیبل نے  نوکری سے ...
والدہ کو ہسپتال لے جانے کے لیے چھٹی نہ ملنےپر پولیس کانسٹیبل نے  نوکری سے استعفی دیدیا

  

اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)وفاقی پولیس کے کانسٹیبل نے کینسر کے موذی مرض میں مبتلا اپنی والدہ کاعلاج کروانے کے لیے چھٹی نہ ملنے پر نوکری سے استعفی دیدیا۔

سادہ کاغذ پر جمع کروائے گئے استعفے میں کانسٹیبل سید محسن نقوی کا کہنا ہے کہ گزشتہ چند ماہ سے سائل کی والدہ سخت بیمار ہیں اور سائل ان کا علاج مختلف ہسپتالوں سے کروا رہا ہے اسی دوران سائل کا تبادلہ آپریشن ڈویژن سے اے آر یو ہواجہاں آمد کروائی 20 ستمبر 2021ء کو سائل کی والدہ کو کینسر کی بیماری تشخیص ہوئی۔ سائل اپنی والدہ کا علاج کروانے کی غرض سے محکمہ سے چھٹی لینا چاہتا تھا گزشتہ رات اپنی ڈیوٹی سر انجام دینے کے بعد 27 ستمبر کی شام پانچ بجے تک مسلسل دفاتر میں ذلیل ہوتا رہا۔آخر کار ایس پی ہیڈ کوارٹر سید عارف حسین شاہ کے پاس پیش ہوا اور انہیں والدہ کی بیماری کے تمام رپورٹس دکھائے لیکن ایس پی ہیڈ کوارٹر نے سائل کو چھٹی دینے سے انکار کر دیا۔

کانسٹیبل کا کہنا ہے کہ میں ایس پی سے سوال ہے کہ کیا ہم انسان نہیں ہیں یا ہمارے والدین اور بچے نہیں ہیں؟ محکمہ سے اتنے سال وفاداری کا نتیجہ دیکھ کر سائل محکمہ سے مستعفی ہونا چاہتا ہے اور افسران کو اس عمل سے آگاہ کرنا چاہتا ہوں کہ پولیس ملازمین آخر خودکشی کیوں کرتے ہیں۔

مزید :

جرم و انصاف -علاقائی -اسلام آباد -