سربجیت کا علاج پاکستان میں ہی ہو گا، چار رکنی کمیٹی نے پنجاب حکومت کو فیصلے سے آگاہ کر دیا، بھارتی سفارتخانے کے دو اہلکاروں کی سربجیت سنگھ کی عیادت

سربجیت کا علاج پاکستان میں ہی ہو گا، چار رکنی کمیٹی نے پنجاب حکومت کو فیصلے ...
سربجیت کا علاج پاکستان میں ہی ہو گا، چار رکنی کمیٹی نے پنجاب حکومت کو فیصلے سے آگاہ کر دیا، بھارتی سفارتخانے کے دو اہلکاروں کی سربجیت سنگھ کی عیادت

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) بھارتی جاسوس اور سزائے موت کے قیدی سربجیت سنگھ کے معائنے کیلئے تشکیل دی گئی چار رکنی کمیٹی نے معائنے کے بعد سربجیت کا علاج پاکستان میں ہی کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور پنجاب حکومت کو اپنے فیصلے سے آگاہ کر دیا ہے۔ جناح ہسپتال کے پرنسپل شوکت محمود کی سربراہی میں پروفیسر ظفر اقبال، پروفیسر انجم حبیب اور پروفیسر نعیم قصوری پر مشتمل چار رکنی میڈیکل پینل نے سربجیت سنگھ کے سٹی سکینز اور تفصیلی طبی معائنہ کیا۔ میڈیکل بورڈ کے مطابق سربجیت سنگھ کے سر میں شدید چوٹیں لگی ہیں اور گہری چوٹیں لگنے کے بعد سربجیت کا آپریشن بھی ممکن نہیں ہے تاہم اس کا علاج پاکستان میں ہی کیا جائے گا۔ دوسری جانب بھارتی سفارتخانے کے دو اہلکاروں نے جناح ہسپتال میں سربجیت سنگھ کی عیادت بھی کی۔ یہاں یہ امر قابل ذکر ہے کہ جناح ہسپتال کے میڈیکل سپرنٹنڈنٹ اعجاز احمد شیخ نے سربجیت کے معائنے اور بیرون ملک بھیجنے سے متعلق فیصلے کیلئے کمیٹی تشکیل دیئے جانے کی تردید کی تھی اور کہا تھا کہ سربجیت کے معائنے کیلئے کوئی کمیٹی تشکیل نہیں دی گئی اور نہ ہی اسے علاج کیلئے بیرون ملک بھیجا جا رہا ہے جبکہ انہیں سربجیت سے متعلق دفتر خارجہ سے بھی کوئی خط نہیں ملا۔

مزید : لاہور /اہم خبریں