لاہورہائیکورٹ نے بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ پر وزارت پٹرولیم سے رپورٹ طلب کرلی

لاہورہائیکورٹ نے بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ پر وزارت پٹرولیم سے رپورٹ طلب ...
لاہورہائیکورٹ نے بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ پر وزارت پٹرولیم سے رپورٹ طلب کرلی

  

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) لاہورہائیکورٹ نے صوبائی دارلحکومت میں بجلی بحران کی رپورٹ طلب کرتے ہوئے وزارت پٹرولیم کو بھی فریق بنادیاہے ۔ چیف جسٹس لاہورہائیکورٹ نے بجلی کی غیراعلانیہ لوڈ شیڈنگ سے متعلق کیس کی سماعت کی ۔ دوران سماعت لیسکو نے اووبلنگ سے متعلق رپورٹ پیش کردی ۔عدالت نے استفسار کیاکہ چوروں اور بل اداکرنیوالوں میں میں فرق کیوں نہیں کیاجارہا؟ لگتاہے کہ اوور بلنگ بھی ہورہی ہے ۔ پیپکو کے وکیل نے بتایاکہ لیسکو کو پوری بجلی دے رہے ہیں ، لیسکو اپنے طورپر بجلی کی لوڈشیڈنگ کررہی ہے ۔ عدالت کا کہناتھاکہ غلط بیانی نہ کریں ، اٹھارہ ، اٹھارہ گھنٹے کی لوڈشیڈنگ جاری ہے ۔عدالت کاکہناتھاکہ چوری والے علاقوں میں بجلی کی سپلائی کم ہونی چاہیے شرفاءسے بجلی کے بل وصول کرکے چوروں کو سبسڈی دی جارہی ہے ۔فاضل عدالت نے وزارت پٹرولیم کو بھی کیس میں فریق بناتے ہوئے تین مئی کو جواب طلب کرلیا۔

مزید : بزنس /اہم خبریں