بے نظیر قتل کیس :مشرف کے بیان کے بعدایف آئی اے کا رحمان ملک سے بھی پوچھ گچھ کا فیصلہ

بے نظیر قتل کیس :مشرف کے بیان کے بعدایف آئی اے کا رحمان ملک سے بھی پوچھ گچھ کا ...
بے نظیر قتل کیس :مشرف کے بیان کے بعدایف آئی اے کا رحمان ملک سے بھی پوچھ گچھ کا فیصلہ

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) فیڈرل انوسٹی گیشن ایجنسی (ایف آئی اے ) نے بے نظر قتل کیس میں سابق وزیرداخلہ رحمان ملک کو شامل تفتیش کرنے کا فیصلہ کرلیاہے ۔ذرائع کے مطابق بے نظیر قتل کیس میں ایف آئی اے کی تحویل میں موجود سابق فوجی صدر پرویز مشرف نے دوران تفتیش موقف اپنایاکہ 27دسمبر 2007ءکو راولپنڈی میں نکالی گئی ریلی او ر جلسے کا سیکیورٹی پلان سابق وزیرداخلہ نے ترتیب دیاتھا۔اُنہوں نے بے نظیر قتل میں ملوث ہونے کے الزام کو مسترد کرتے ہوئے کہاکہ بی بی کا قتل سیکیورٹی کی ناکامی تھی جس کے ذمہ داررحمان ملک ہیں ۔پرویز مشرف نے کہاکہ رحمان ملک اُن کی حکومت اور پیپلزپارٹی کے درمیان ثالث کا کردار اداکررہے تھے اور وہی پولیس کے ساتھ سیکیورٹی انتظامات کیلئے مذاکرات بھی کررہے تھے ۔آج نیوز کے ذرائع کے مطابق ایف آئی اے کی جوائنٹ انوسٹی گیشن ٹیم نے سابق فوجی حکمران کے بیان کے بعد قانونی تقاضے پورے کرنے کے لیے رحمان ملک کو نوٹس جاری کرنے اور اُن کا بیان ریکارڈ کرنے کافیصلہ کرلیاہے جس کیلئے نوٹس جلد جاری کیاجائے گا۔

مزید : قومی