حنا پرویز کی پانی ملے دودھ کے خلافتحریک التواء اسمبلی میں جمع

حنا پرویز کی پانی ملے دودھ کے خلافتحریک التواء اسمبلی میں جمع


لاہور(سپیشل رپورٹر)مسلم لیگ (ن) کی رکن پنجاب اسمبلی حنا پرویز بٹ نے یوریا اور گندے پانی ملے دودھ کی کھلے عام فروخت کے خلاف پنجاب اسمبلی میں تحریک التوائے کار جمع کرا دی اپنی تحریک میں انہوں نے کہا کہ میڈیا میں شائع ہونیوالی خبروں کے مطابق ایک دودھ کی بڑی گاڑی میں دو بوری یوریا کیمیکل اور گندا پانی استعمال کیا جاتا ہے جو صحت کیلئے نہایت مضر صحت ہے‘ مافیا نے پٹرول مپوں پر اپنے اڈے بنالئے‘ ٹھنڈا ہونے پر دودھ گاڑھا ہو جاتا ہے اور چوبیس گھنٹہ سے زیادہ وقت نہیں نکال سکتا‘ دکاندار بچ جانیوالے دودھ کی رس ملائی‘ پنیر‘ کھیر اور برفی بنا کر فروخت کر دیتے ہیں لاہور سمیت پنجاب بھر میں یوریا‘ گندا پانی مکس کرکے دودھ کی فروخت‘ محکمہ صحت نے فروخت ہونیوالے دودھ کو انسانی صحت کیلئے زہر قرار دیدیا یوریا اور گندے پانی ملے دودھ کی فروخت اور استعمال سے شہری مثانہ اور معدے کے کینسر‘ معدے کے السر‘ ہیپاٹائٹس‘ یورک ایسڈ کے بڑھنے اور پیٹ کی بیماریوں میں مبتلا ہونے لگے شیخوپورہ‘فیصل آباد کی طرف سے آنے ولالے اس دودھ کو سگیاں پل کے باہر پٹرول پمپوں پر کھڑا کرکے وہاں یوریا اور گندا پانی ملا کر ملاوٹ کی جاتی ہے۔ اوکاڑہ‘ رینالہ خورد‘ قصور‘ پتوکی کی طرف سے آنیوالی دودھ کی گاڑیوں میں ملتان روڈ پر لاہور میں داخل ہونے سے پہلے پٹرول پمپوں پر ملاوٹ کی جاتی ہے۔ نارووال مریدکے‘ نارنگ منڈی کی طرف سے آنیوالے دودھ کی گاڑیوں میں شاہدرہ کے مقام پر ملاوٹ کی جاتی ہے لیکن جو ادارے ان کی چیکنگ کرنے کیلئے بنائے گئے ہیں وہ ان کو چیک کرنے کی بجائے اپنی تجوریاں بھرنے پر لگے ہوئے ہیں پھر ظلم کی انتہاء یہ کہ ان ظالموں کو کوئی پوچھنے والا بھی نہیں ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1