آئی ایم ایف نے حکومت سے ریٹائرمنٹ کی عمر بڑھانے کا مطالبہ کردیا

آئی ایم ایف نے حکومت سے ریٹائرمنٹ کی عمر بڑھانے کا مطالبہ کردیا
آئی ایم ایف نے حکومت سے ریٹائرمنٹ کی عمر بڑھانے کا مطالبہ کردیا

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک )انٹر نیشنل مانیٹری فنڈ( آئی ایم ایف) نے سرکاری ملازمین کی ریٹائرمنٹ کی عمر 60 سے 62 برس کرنے کی تجویز دی ہے۔ عالمی مالیاتی فنڈ کا کہنا ہے کہ اخراجات میں کمی کیلئے حکومت پینشن بل کنٹرول کرے۔انٹرنیشنل مانیٹری فنڈ نے حکومت پاکستان کو تجویز دی ہے کہ ان سرکاری ملازمین کی خدمات سے مزید دو برس کے لیے فائدہ اٹھایا جائے جو ریٹائرمنٹ کی حد کو پہنچ چکے ہیں، اس سے نہ حکومت کو انہیں ریٹائر کرنا پڑے گااور نہ وفاقی حکومت کی جیب پر پنشن کا بوجھ پڑے گا۔وفاقی حکومت نے تنخواہوں اور پینشن کی مد میں اخراجات کا تخمینہ تقریباً 450 ارب روپے لگایا گیا ہے اور رواں مالی سال کے دوران صرف پینشن کے اخراجات تقریباً 171ارب روپے ہیں۔آئی ایم ایف نے یہ تجویز سرکاری اخراجات کے اصلاحی پروگرام کے طور پر دی ہے۔ مالیاتی ادارے کا کہنا ہے ہر برس پنشن بل میں اضافہ ہورہا ہے اسی لیے حکومت پاکستان ریٹائرمنٹ کی عمر بڑھائے۔اس سے پہلے بھی ریٹائرمنٹ کی عمر60 سال سے بڑھا کر62 کرنے کی تجویز دی گئی لیکن حکومت نے ہمیشہ حوصلہ شکنی کی جس کا مقصد نوجوانوں کی روزگار فراہم کرنا تھا۔آئی ایم ایف کا کہنا ہے تخواہوں کے بل میں اضافہ کو خدمات کی فراہمی اور مالیاتی وسعت میں اضافے کے مطابق ہونا چاہیے۔ یہ مشورہ ا±س وقت سامنے آیا جب حکومت نے خود بھی اعلان کیا ہے کہ بجٹ میں تنخواہوں اور پنشن میں اضافہ نہیں ہوگا۔

مزید : قومی /اہم خبریں