وہ سوالات جو آپ کو شادی سے قبل اپنی ممکنہ ہمسفر سے ضرور پوچھ لینے چاہئیں

وہ سوالات جو آپ کو شادی سے قبل اپنی ممکنہ ہمسفر سے ضرور پوچھ لینے چاہئیں
وہ سوالات جو آپ کو شادی سے قبل اپنی ممکنہ ہمسفر سے ضرور پوچھ لینے چاہئیں

  

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) شادی کچھ لوگوں کے لیے خوفزدہ کردینے والی چیز ہو سکتی ہے کیونکہ بالآخر یہ زندگی بھر کا معاملہ ہوتا ہے۔ لیکن کچھ ایسے سوالات ہیں جو لڑکے لڑکی کو شادی سے قبل ایک دوسرے سے ضرور پوچھ لینے چاہئیں کیونکہ اس سے ان کی آئندہ زندگی آسان ہو جائے گی۔ ویب سائٹ مینگوباز کی رپورٹ کے مطابق دولہا کو اپنی ممکنہ شریک حیات سے پہلا سوال یہ پوچھنا چاہیے کہ ”کیا اسے شادی کے بعد سسرالی رشتہ داروں، ساس اور سسر وغیرہ کے ساتھ رہنے پر کوئی اعتراض تو نہیں؟“ شادی کے بعد بیشتر ناخوشگوار واقعات اسی سوال سے جڑے ہوتے ہیں چنانچہ اس کا جواب پہلے سے حاصل کرلینا بعد کی زندگی کے لیے بہت ضروری ہوتا ہے۔

’جب خواتین لال رنگ پہنتی ہیں تو اس کا مطلب دراصل یہ ہوتا ہے کہ وہ۔۔۔‘ جدید تحقیق میں ایسا متنازعہ ترین انکشاف کہ دنیا بھر کی خواتین نے ہنگامہ برپاکردیا

رپورٹ کے مطابق لڑکے اور لڑکی کو شادی سے قبل ایک دوسرے کی خاندانی رسوم و روایات کے متعلق بھی سوالات کرنے چاہئیں اور معلومات حاصل کرنی چاہئیں تاکہ شادی کے روز یا اس کے بعد کوئی عجیب و غریب قسم کی انجانی رسم کوئی ناخوشگوار صورتحال پیدا نہ کر سکے۔دونوں کو ایک دوسرے سے یہ سوال بھی کرنا چاہیے کہ ”ان کے خاندانوں کو ان سے کیا توقعات ہیں۔ یعنی لڑکی کے والدین لڑکے سے اور لڑکے کے والدین لڑکی سے کیا امیدیں وابستہ کیے بیٹھے ہیں۔ اس طرح دونوں اپنے ممکنہ سسرالیوں کی توقعات سے آگاہ ہوں گے اور بعدازاں کسی اچانک افتاد سے بچ سکیں گے۔ لڑکیوں کو ایک سوال بالخصوص اپنے ممکنہ شوہر سے ضرور پوچھ لینا چاہیے کہ ”کیا انہیں شادی کے بعد نوکری یا تعلیم جاری رکھنے کی اجازت ہو گی؟“ اس کے علاوہ دونوں کو ایک دوسرے کے لائف سٹائل، مذہبی رجحان، بچوں کی تعدادکے متعلق بھی سوالات ضرور پوچھ لینے چاہئیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -