بھارتی سکول میں طلباء کو لنچ باکس میں آملیٹ و گوشت نہ لانے کا حکم

بھارتی سکول میں طلباء کو لنچ باکس میں آملیٹ و گوشت نہ لانے کا حکم

  

میرٹھ(مانیٹرنگ ڈیسک) بھارتی ریاست اتر پردیش کے ضلع میرٹھ کے ایک سکول نے اپنے طلبہ پر ایسی سخت پابندیاں عائد کر دی ہیں جن کا مہذب معاشرے میں تصور بھی نہیں کیا جا سکتا۔ انڈین میڈیا رپورٹس کے مطابق ریشبھ نامی اس سکول کی انتظامیہ نے تمام طلبہ کو ہدایات جاری کی ہیں کہ وہ وزیر اعلیٰ آدتیہ ناتھ یوگی جیسے بال کٹوائیں، لنچ باکس میں انڈے، آملیٹ یا گوشت نہ لائیں۔ ان احکامات کی خلاف ورزی پر طلبہ کو نہ صرف سکول سے نکال دیا جائے گا بلکہ ان کیخلاف قانونی کارروائی بھی کی جائے گی۔ مسلمان اور دیگر اقلیتوں سے تعلق رکھنے والے والدین نے سکول کے اس اقدام پر شدید احتجاج کرتے ہوئے اسے آمریت پسندی اور بنیادی حقوق کی خلاف ورزی قرار دیا ہے۔متعلقہ سکول انتظامیہ نے اپنے اس اقدام کی دلیل پیش کرتے ہوئے کہا ہے کہ نظم وضبط برقرار رکھنے کیلئے یہ اقدام اٹھایا گیا ہے۔ اس کے تحت طلبہ کے لمبے بال رکھنے اور ٹفن میں سبزی اور دال کے علاوہ کچھ اور لانے پر پابندی عائد کر دی گئی ہے۔ سکول انتظامیہ کا کہنا ہے کہ طالبعلموں کو ان ہدایات پر سختی سے عمل کرنا ہوگا۔ طالبعلموں کو ابھی سے بال بڑھانے اور داڑھی رکھنے کی بھی کوئی ضرورت نہیں ہے۔ سکول انتظامیہ کا یہ بھی کہنا تھا کہ ہم جہاد جیسی سرگرمیوں کو قطعی نہیں بڑھنے دیں گے، اس لئے لڑکوں اور لڑکیوں کی کلاسیں بھی الگ کی جا رہی ہیں۔

میرٹھ سکول

مزید :

صفحہ اول -