سرحدی محافظوں کی ہلاکت پر ایران کا پاکستان سے احتجاج

سرحدی محافظوں کی ہلاکت پر ایران کا پاکستان سے احتجاج

  

تہران (مانیٹرنگ ڈیسک ، صبا ح نیوز) ایران نے تہران میں تعینات پاکستانی سفیر کو طلب کر کے پاکستانی سرحد کے قریب شدت پسندوں کے حملے میں نو ایرانی سرحدی محافظوں کی ہلاکت پر احتجاج کیاجبکہ پاکستانی سفیر نے دہشت گردی کے اس واقعے پر افسوس کا اظہار کیا اور ہر ممکن تعاون کا یقین دلایا جبکہ ایران کے صدر حسن روحانی نے وزیر اعظم نواز شریف کے نام ایک پیغام میں کہا ہے ایرانی سرحدی محافظوں کو ہلاک کرنیوالے حملہ آوروں کو جلد گرفتار کیا جائے۔ ایران اپنے دوست ملک کے استحکام، سکیورٹی و ترقی کو بہت اہمیت دیتا ہے، خطے میں پراکسی وارز کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا ایرانی صدر کا اپنے پیغام میں مزید کہنا ہے کہ بدقسمتی سے کچھ ممالک پراکسی وار کے ذریعے اسلامی ممالک میں یکجہتی کو نقصان ، دہشت گردوں کر کے اسلامی ممالک میں تشدد، عدم استحکام، غربت و پسماندگی لانا چاہتے ہیں، باعث افسوس ہے کہ سرحدی محافظوں پر حملے کرنے کیلئے دہشت گرد پاکستان کی زمین استعمال کرتے ہیں۔ ایران نے اپنی سرزمین کو کبھی ہمسایہ ممالک بشمول پاکستان کیخلاف استعمال نہیں ہونے دیا،لیکن شدت پسندوں نے کئی بار پاکستان کی جانب سے ایرانی سرحدی محافظوں پر حملے کیے ہیں جن کے نتیجے میں کئی محافظ اور شہری ہلاک ہوئے ہیں۔گشت کرنیوالے محافظوں پر حملے کی ذمہ داری جیش العدل نامی شدت پسند گروپ نے قبول کی ہے اور ایرانی حکام کا دعوی ہے کہ حملہ آور سرحد پار سے آئے تھے۔پاکستانی حکام نے بار ہا سرحد پر کنٹرول مزید سخت کرنے کی یقین دہانیاں کروائیں لیکن اس کے باوجود حملے جاری ہیں۔ادھر ایرانی وزیر دفاع جنرل حسین دھقان نے کہا ہے پاکستان کیساتھ سرحدی محافظوں کی ہلاکت پر جوابی کارروائی کا حق رکھتے ہیں، پاکستان حملہ آوروں کی گرفتاری کیلئے فوری اقدامات کرے۔

مزید :

صفحہ آخر -