10ارب کی پیشکش کرنیوالے کا نام عدالت میں بتاؤ نگا : عمران خان

10ارب کی پیشکش کرنیوالے کا نام عدالت میں بتاؤ نگا : عمران خان

  

اسلام آباد ( مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان تحریک انصاف کے چیئر مین عمران خان نے ایک بار دس ارب روپے کی پیشکش کا ذکر کیا انہوں نے کہا کہ مجھے عدالت میں بلائیں عدالت میں دس ارب روپے کی پیشکش کرنے والے کا نام بتاؤنگا۔ عمران خان نے پریڈ گراؤنڈ میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ قوم کو اپنے لئے نہیں، ملک کیلئے بلاتا ہوں، آپ کیلئے میرے دل سے دعا نکل رہی ہے۔ انہوں نے اپنا دعویٰ دہراتے ہوئے کہا کہ انہیں وزیر اعلیٰ پنجاب کے قریبی ساتھی کی جانب سے 10 دس ارب کی آفر ہوئی جس نے عدالت جانا ہے جائے۔ ان کا کہنا تھا کہ مجھے عدالت بلاؤ، آفر لانے والے کا نام بتاؤں گا، عدالت سے آفر لانے والے کی سکیورٹی کی استدعا بھی کروں گا۔پریڈ گراؤنڈ میں میں جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ ایک وقت تھا کہ پاکستان کی پوری دنیا میں ایک حیثیت تھی،جس پر عوام کو فخر تھا۔قائد اعظم اور علامہ اقبال کی عظیم جدو جہد سے پاکستان معرض وجود میں آیا ۔ انہوں نے کہا یا اللہ ہمارے ملک کو ایک عظم ترین ملک بنا دے۔پاکستانیو آج میرے دل سے آپ کیلئے دعائیں نکل رہی ہیں ۔جلسہ عام میں گو نوا ز گو کے نعرے لگے ، کپتان نے وزیر اعظم کے استعفے کا مطالبہ دہرایا ۔پریڈ گراؤنڈ میں پی ٹی آ ئی کی سیاسی قوت کا مظاہرہ کرنے کیلئے عمران خان جلسہ گاہ پہنچے۔ پنڈال، پارٹی پرچموں کی بہار، لاہور، ملتان اور سیالکوٹ سمیت پنجاب سے قافلے رواں دواں رہے پی ٹی آئی کی ٹائیگر یسز پرجوش رہیں جلسہ گاہ میں ہر طرف چوڑیوں کی کھنکھار رہی ڈی جے ولی سنز میوزک کا تڑکا لگانے کو تیار تھادلہے میاں بارات چھوڑ کر جا پہنچے۔ تحریک انصاف کے اسلام آباد کے پریڈ گراؤنڈ میں جلسے کیلئے 80 فٹ لمبا، 20 فٹ چوڑا سٹیج تیار کیا گیا ۔ پنڈال سج گیا ۔ پارٹی کی جانب سے 40 ہزار سے زائد کرسیاں لگانے کا دعویٰ کیا گیا ہے۔ اس موقع پر فول پروف سکیورٹی پلان بھی ترتیب دیا گیا ۔ذرائع کے مطابق مرکزی سٹیج پر 70 قائدین کے بیٹھنے کی گنجائش تھی،دوسری جانب جلسہ گاہ کی سکیورٹی کیلئے 2400 پولیس اور رینجرز اہلکار تعینات رہے جبکہ جلسہ گاہ میں 20 واک تھرو گیٹس لگائے گئے ہیں۔ جلسہ گاہ کو چاروں اطراف سے خاردار تاروں کے ذریعے بند کیا گیا ۔ صبح 10 بجے بم ڈسپوزل سکواڈ نے بھی جلسہ گاہ کو کلیئر کیا۔۔پی ٹی آئی جلسے میں پھر بدنظمی، وی آئی پی گیٹ پر ہاتھا پائی ہوئی جس سے 1 کارکن بے ہوش ہو گیا،تحریک انصاف کے جلسے میں شریک متوالیوں کا جوش قابل دید تھاا پارٹی پرچموں کے رنگوں میں رنگی متوالیوں کی چوڑیاں بھی کھنکنے لگیں۔تحریک انصاف کے جلسے میں بدنظمی پھر عروج پر رہی، وی آئی پی گیٹ سے داخلے کی کوشش میں کھلاڑی گتھم گتھا ہو گئے، ایک دوسرے کو دھکے دئیے، کپتان کی آمد پر بھی دھکم پیل ہوتی رہی، پنڈال میں ایک کارکن بیہوش ہو گیا۔ پریڈ گراؤنڈ جلسے میں جنون عروج پر رہا۔ کھلاڑیوں کی بدنظمی کی روایت بھی برقرار رہی۔ وی آئی پی گیٹ سے داخلے کی کوشش میں کھلاڑی آپے سے باہر ہو گئے۔ ایک دوسرے سے گتھم گتھا بھی ہوئے۔ کئی کھلاڑیوں نے سٹیج پر چڑھنے کی کوشش کی اور جلسہ انتظامیہ اور سکیورٹی اہلکاروں سے الجھتے رہے۔ کپتان کی آمد کے موقع پر بھی وی آئی پی گیٹ پر دھکم پیل ہوتی رہی۔ پنڈال میں ایک کھلاڑی بے ہوش ہو گیا جسے خاردار تاروں سے گزار کر طبی امداد کیلئے لے جایا گیا۔میک اپ ہو یا ملبوسات، سب میں پارٹی پرچم کے رنگ نمایاں ہیں جس بھی متوالی کو دیکھیں کپتان کی آواز پر لبیک کہہ رہی ہے۔ ہاتھوں میں پارٹی کے جھنڈے اٹھائے خواتین کہتی ہیں کہ کرپشن کے خلاف عمران خان کا ساتھ ہر حال میں دیں گی۔عوامی مسلم لیگ کے سربراہ شیخ رشید نے کہاہے کہ2میں فیل ہوگئے،3میں سپلی آگئی اور کہا جاتا ہے کہ پپو پاس ہوگیا، میں عمران خان کا ساتھی ہوں اور یہ ہی آخری امید ہیں، گھی سیدھی انگلی سے نہ نکلا تو خان صاحب کی قیادت میں ٹیڑھی انگلی سے نکالیں گے۔ آج ملک میں وزیرخارجہ ہوتا تواسمبلی میں جنرل راحیل شریف کی تعیناتی پربحث ہوتی جبکہ طارق فاطمی، پرویز رشید اور راو تحسین کو بھی قربانی کی بھینٹ چڑھایا جا رہا ہے۔پانامہ کیس کی سماعت کے دوران دو ججوں نے کہا وزیراعظم صادق اور امین نہیں جبکہ تین نے کہا کہ انہیں 60دن کاوقت دیا جائے،پانچ ججوں نے کہا کہ قطری خط فراڈ ہے ، کاغذات فضول ہیں،پیسہ کہاں گیا؟،یہی نہیں ججوں نے فیصلے میں میرے متعلق بہت اچھے جملے استعمال کیا حالانکہ میں ایک چھوٹا سا وکیل ہوں۔انہوں نے کہا کہ میں پاکستانی وکلا کو دعوت دیتا ہوں کہ وہ 6 مئی کو سڑکوں پر نکلیں اورپورا پاکستان ان کا تاریخی استقبال کرے گا۔وکلا بھی جانتے ہیں کہ عوام واقعی تبدیلی چاہتے ہیں اور قوم نے عمران خان سے امید لگائی ہے۔ ریاض پیر زادہ نے چوروں کو بے نقاب کیااور بھی لوگ بے نقاب ہوں گے ،میں نواز شریف سے سوال کرتا ہوں کہ کہاں گئی نندی پور کی بجلی اور بھاشا ڈیم؟میں زندگی کے اس موڑ پر نظام سے علم بغاوت کرنا چاہتا ہوں، مرنا چاہتا ہوں یا مارنا چاہتا ہوں۔اگر گھی سیدھی انگلی سے نہیں نکلا تو کوئی بات نہیں میں خان صاحب کی قیاد ت میں ٹیڑھی انگلی سے نکال کر دکھاوں گا،اس وقت ساری قوم کا ایک ہی نعرہ ہے کہ ’’گو نواز گو‘‘۔تحریک انصاف کے مرکزی رہنما شاہ محمودقریشی نے کہاہے کہ وزیراعظم کو ساٹھ دن کی مہلت دیتے ہیں،کسان ،مزدور ،وکلاء اورطالب علم حکمرانوں کو گھربھیجنے کی تحریک میں شامل ہوجائیں،جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے شاہ محمود قریشی نے کہاکہ حکمران عوامی طاقت سے محروم ہوچکے ہیں، پانامہ کیس پر انہوں نے جیسے جیسے فیصلہ پڑھا ان کی خوشی مایوسی میں بدل گئی اورمٹھائیاں کم ہوگئیں جب حکمران کرپٹ ہوتے ہیں تو غربت میں اضافہ ہوتا ہے انہوں نے کہاکہ پنجاب کے کسانوں کی سرکاری ریٹ پر گندم نہیں خریدی جارہی کیا ٹیکسٹائل لومز،مزدور، وکلاء اس پرخاموش رہیں گے عوام لوڈشیڈنگ سے بیزارہوچکے ہیں ان کی وعدہ خلافیوں کے باوجود کیاعوام خاموش رہیں گے قانون کی کچہری اپنا فیصلہ دے چکی ہے عدالت میں ان کے ثبوتوں کومسترد کردیا ہے اب عوام کی کچہری سے پوچھتا ہوں کہ کیا عوام کی کچہری ان کو بے گناہ یاگناہ گارسمجھتی ہے یہ فیصلہ عوام نے دینا ہے اگر عوام سمجھتے ہیں کہ یہ گناہ گار ہیں تو کمرباندھ کرعمرا ن خا ن کی تحریک میں شامل ہوجائیں یہ تحریک پاکستان کی تحریک ہے یہ تحریک حکمرانوں کو گھربھیجنے کی تحریک ہے۔تحریک انصاف کے سیکرٹری جنرل جہانگیرخان ترین نے کہاہے کہ پانامہ کیس میں ایسے ثبوت دیئے ہیں کہ دنیا حیران رہ گئی ہے، دو ججوں نے وزیراعظم کومجرم باقی تین نے کہا ملزم ہے مزید تفتیش کی جائے جے آئی ٹی کی کارروائی میں حصہ ڈالیں گے بندکمرے میں نہیں ہونے دینگے۔جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے جہانگیرخان ترین نے کہاکہ آخرکارنوازشریف کی تلاشی سپریم کورٹ نے شروع کی ہم نے لاک ڈاؤن ختم کیا چھ ماہ مقدمہ چلتارہا عمران خان ہرپیشی پر گئے ہم نے ایسے ثبوت دیئے کہ دنیا حیران ہوگئی کوئی سوچ بھی نہیں سکتاتھا کہ ہم ایسے ثبوت دینگے دوججوں نے کہاکہ وزیراعظم مجرم ہے اور تین نے کہاکہ یہ ملزم ہے اس کی مزید تفتیش کریں تمام ججز نے قطری خط کو فراڈ قراردیاجسٹس اعجازالاحسن نے قطری خط کے بارے میں کہاکہ یہ بوگس ہے ان کاسارا کچھ قطری خط تھا کیونکہ ان کی ہرچیز میں قطر قطر تھا ججز نے قطری خط کو باہرنکال دیا گیارہ سوالات کے جواب جے آئی ٹی نے لیکرآنے ہیں سات دن جے آئی ٹی کی کارروائی دیکھیں گے جے آئی ٹی کی کارروائی میں حصہ ڈالیں گے بند کمرے میں تحقیقات نہیں ہونے دینگے انہوں نے کہاکہ لوڈشیڈنگ کابراحال ہے اس سال سات ہزارمیگاواٹ کاشارٹ فال ہے شہبازشریف نے کہاتھاکہ اگر چھ مہینے میں لوڈشیڈنگ ختم نہ کی تو میرانام بدل دینا اس کانام شوزبازرکھیں یہ ہیں ان کے جھوٹ ۔یہ مکمل ناکام ہوگئے صرف کرپشن میں شیر ہیں دوسوپچاس ارب روپے اورنج لائن پر لگائیں گے اپنی جیبیں بھرتے ہیں عوام اور غریب ہوگئی ہے کاشتکاروں کے چراغ بجھ گئے ہیں پاکستان میں لوڈشیڈنگ کے بعد کاشتکاروں کاسب سے بڑامسئلہ ہے گندم کاریٹ تیرہ سو روپے رکھا گیا جبکہ کسان گیارہ سو روپے سے زیادہ نہیں مل رہا سو ارب کسانوں کی جیب سے نکال کر کھائے جارہے ہیں ان کی جب حکومت ختم ہوگی تو ہم کاشتکاروں کے حالات ٹھیک کرینگے ہم عوام کو مضبوط کرینگے تاکہ وہ اپنے فیصلے خود کریں اداروں کو مضبوط کرینگے کوئی سیاسی مداخلت نہیں ہوگی ۔

عمران خان

مزید :

کراچی صفحہ اول -