بلدیاتی سیٹ اپ کی تبدیلی کے دوران بوسن ٹاؤن کا لاکھوں مالیتی سرکاری سامان غائب

بلدیاتی سیٹ اپ کی تبدیلی کے دوران بوسن ٹاؤن کا لاکھوں مالیتی سرکاری سامان ...

  

ملتان (خبر نگار) سابق ایڈمنسٹریٹر بوسن ٹاؤن کی طرف سے بلدیاتی سیٹ اپ کی تبدیلی کے دوران لاکھوں روپے کاقیمتی سرکاری سامان غائب کیے جانے کا انکشاف ہوا ہے ۔ ضلع کونسل(بقیہ نمبر33صفحہ12پر )

ملتان انتظامیہ نے غائب ہونے والا قیمتی سامان جس میں جنریٹر ، کمپیوٹرز، ائیر کنڈیشنز، ملٹی میڈیا ، ٹی وی ، فرنیچر، پنکھے سمیت کل 16 آئٹم شامل ہیں سابق ایڈمنسٹریٹ سے وصول کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور اس ضمنی میں باقاعدہ رپورٹ ڈپٹی کمشنر ملتان اور لوکل گورنمنٹ انتظامیہ کو بھی بھجوادی ہے ۔ صوبہ بھر میں ٹی ایم ایز کے خاتمے کے موقع پر ملتان میں اثاثہ جات کی تقسیم کے موقع پر بوسن ٹاؤن کے تمام اثاثہ جات ضلع کونسل ملتان کو منتقل کا فیصلہ کیا گیا تھا۔ بتایا گیا ہے کہ منتقولہ اثاثہ جات کے ریکارڈ کے مطابق بوسن ٹاؤن کی 16 قیمتی اشیاء جن میں 2جنریٹر 1ایل سی ڈی 42انچ، آفیسرز کرسیاں 5عدد، ٹیبل 1عدد، آفس کرسیاں 16عدد، کمپیوٹر سیٹ پرنٹر کے ساتھ 2عدد، ملی میڈیا، یوپی ایس، بیٹریاں اور متعدد اقسام کے پنکھے شامل ہیں سابق ایڈمنسٹریٹر بوسن ٹاؤن و ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر ریونیو منظر جاوید علی کے کیمپ آفس (گھر) کیلئے فراہم کیے گئیے تھے۔ اور بلدیاتی سسٹم کی تبدیلی کے وقت مذکورہ اشیاء واپسی نہیں کی گئیں بتایا گیا ہے کہ ضلع کونسل انتظامیہ نے کئی ماہ کی پردہ پوشی اور منظر علی جاوید سے زبانی کلامی ان اشیاء کی واپسی کا تقاضا کیا ہے۔ مگر ابھی تک سرکاری سامان کی واپسی نہیں ہے بالآخر چیف آفیسر ضلع کونسل ملتان نے لاکھوں روپے کے قیمتی سرکاری سامان کی واپسی کیلئے سابق ایڈمنسٹریٹر بوسن ٹاؤن منظر علی جاوید کو باقاعدہ مراسلہ بھجوادیا ہے۔ اور سامان کے غائب ہونے بارے ڈپٹی کمشنر ملتان اور لوکل گورنمنٹ کو باقاعدہ طور پر آگاہ کردیا ہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -