ویسٹ منیجمنٹ کمپنیوں کا کنٹرول بھی میئر کے سپرد، ضلع کونسلیں سراپا احتجاج

ویسٹ منیجمنٹ کمپنیوں کا کنٹرول بھی میئر کے سپرد، ضلع کونسلیں سراپا احتجاج

  

ملتان(خبر نگار) پنجاب کے بڑے شہروں میں ویسٹ مینجمنٹ کمپنیوں کا کنٹرول میئرز کو ملنے کے بعد ملتان سمیت صوبہ بھر کی ضلع کونسل کے چیئرمین نے بھی آمدنی میں اضافے کیلئے سرجوڑ لیے ہیں اور ضلع کونسلوں کی آمدنی کا حجم بڑھانے کیلئے ضلع کی سطح پر منڈی مویشیاں کا کنٹرول حاصل کرنے، جائیداد

منتقلی ٹیکس 1فیصد سے بڑھا کر اڑھائی فیصد کرنے اور شہری حدود سے باہر لینڈ کنورژن فیس وصولی، لینڈ سب ڈویژن اور ہاؤسنگ سکیموں کی منظوری کا اختیار ڈسٹرکٹ کونسل کو دینے کی تجویز پر غور شروع کردیا گیا ہے۔ اور صوبہ بھر کے چیئرمین ضلع کونسلوں کی طرف سے مذکورہ تجویز کو عملی جامہ پہنانے کیلئے ہر ضلعی چیئرمین اپنی سفارشات منظوری کیلئے پنجاب حکومت کو بھجوائے گا جنوری 2017ء سے پنجاب بھر میں پرانے بلدیاتی سیٹ اپ کے خاتمے اور نئے بلدیاتی ادارے وجود میں آنے کے بعد سے آمدنی اور اختیارات بڑھانے کیلئے ادارون کی سرد جنگ کا سلسلہ جاری ہے ۔ بتایا گیا ہے کہ دسمبر 2016ء میں سابق ٹی ایم ایز کے خاتمے کے وقت 31دسمبر 2016ء کو جو صوبہ بر میں فنڈز منجمد کردیئے گئے تھے اور بعد ازاں منجمند فنڈز کی بحالی کے بعد محکمہ لوکل گورنمنٹ پنجاب کی طرف سے جو فنڈز کی تقسیم کے حوالے سے فارمولہ سامنے آیا ہے اس پر میونسپل کارپوریشنز تو فائدے میں رہی ہیں مگر ضلع کونسلوں کو ان کی امید کے مطابق شیئر نہیں مل سکا ہے جس وجہ سے ملتان سمیت صوبہ بھر ضلع کو نسلز کی انتظامیہ مایوسی کا شکار ہیں اور انہوں نے اس تقسیم کو غیر منصفانہ قرار دیتے ہوئے باقاعدہ احتجاج پنجاب حکومت کو بھجوانا شروع کردیا ہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -