دنیا بھرمیں کورونا وائرس سے مرد زیادہ ہلاک ہوئے یا خواتین اور اس کی وجہ کیا بنی؟انتہائی حیرت انگیز رپورٹ سامنے آگئی

دنیا بھرمیں کورونا وائرس سے مرد زیادہ ہلاک ہوئے یا خواتین اور اس کی وجہ کیا ...
دنیا بھرمیں کورونا وائرس سے مرد زیادہ ہلاک ہوئے یا خواتین اور اس کی وجہ کیا بنی؟انتہائی حیرت انگیز رپورٹ سامنے آگئی

  

نیویارک(ڈیلی پاکستان آن لائن)کورونا وائرس سے خواتین کی اموات کم ہوئی ہیں. اس لیے سوچا جارہا ہے کہ کہیں عورت کی جنس ہی تو ان کی محافظ نہیں.

امریکی اخبار نیویارک ٹائمز کے مطابق ماہرین نے خواتین کے سیکس ہارمونز کے ذریعے کورونا کے مریضوں کا علاج کرنے کا منصوبہ بنایا ہے۔ نیویارک کے طبی ماہرین نے گزشتہ ہفتے ہی خواتین میں پائے جانے والے ہارمونز ایسٹروجن (estrogen) سے کورونا کے مریضوں کا علاج کرنا شروع کیا تھا اور اب لاس اینجلس کے ماہرین نے خواتین کے ایک اور ہارمون کی آزمائش بھی شروع کردی۔

دونوں میڈیکل سینٹرز کے ماہرین خواتین میں پائے جانے والے ہارمون پروجیسٹرون (progesterone) کے ذریعے کورونا وائرس کے مرد مریضوں کا علاج کریں گے۔ رپورٹ میں بتایا گیا کہ ایسٹروجن اور پروجیسٹرون نامی ہارمونز خواتین مین زیادہ مقدار میں بنتے ہیں مذکورہ دونوں ہارمونز مدافعتی نظام کو تقویت فراہم کرنے اور وائرل بیماریوں سے محفوظ رکھنے میں بھی مدد فراہم کرتے ہیں۔

ماہرین کورونا کی شدید علامات والے مرد مریضوں کو خواتین کے ہارمونز پیچ (patch) کے ذریعے دیں گے، یہ ایسا طریقہ ہے جس میں ٹیپ کی طرز پر بنائے گئے ایک آلے کو جسم پر کچھ وقت کے لیے رکھا جاتا ہے اور انسانی جسم اس ٹیپ میں موجود دوا کو جذب کرلیتا ہے۔ ماہرین نے اس عمل کو ایسٹروجن اور پروجیسٹرون پیچ کا نام دیا ہے اور اسی طرح کا طریقہ حمل کو روکنے کے لیے بھی اپنایا جاتا ہے۔ نیویارک ٹائمز کے مطابق لاس اینجلس کے ماہرین کو اُمید ہے کہ اس آزمائشی پروگرام کے لیے تقریبا" 110 افراد خود کو رضاکار کے طور پر رجسٹرڈ کروائیں گے، تاہم ابتدائی طور پر کم رضاکاروں کے ساتھ پروگرام کا آغاز کردیا گیا ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -خصوصی رپورٹ -کورونا وائرس -