کورونا بے قابو،برطانوی فضائی کمپنی کے کتنے ہزار ملازمین کو نوکری سے نکال دیاگیا؟ افسوسناک خبرآگئی

کورونا بے قابو،برطانوی فضائی کمپنی کے کتنے ہزار ملازمین کو نوکری سے نکال ...
کورونا بے قابو،برطانوی فضائی کمپنی کے کتنے ہزار ملازمین کو نوکری سے نکال دیاگیا؟ افسوسناک خبرآگئی

  

لندن(ڈیلی پاکستان آن لائن)برطانیہ میں کورونا وائرس سے مزید پانچ سو چھیاسی افراد ہلاک ہوگئے جس کے بعد مجموعی تعداداکیس ہزار چھ سو اٹھہتر ہوگئی ہے۔ملک بھر میں لگے لاک ڈاون کی وجہ سے کاروبار زندگی تباہ ہوگئے ہیں جبکہ سفری پابندیوں کے باعث ایئرلائنز بھی دیوالیہ ہونے کے قریب پہنچ گئی ہیں۔ صورتحال کی سنگینی کے پیش نظر برٹش ایئرویز نے اپنے بیالیس ہزار ملازمین میں سے بارہ ہزار کی نوکریوں کو ختم کرنے کااعلان کیاہے۔

دوسری جانب وائرس کے پھیلاؤ کے دوسرے فیزکےخطرے کے پیش نظرلاک ڈاؤن میں نرمی نہ کرنےکافیصلہ کیا گیاہے۔۔

تفصیلات کے مطابق برٹش ایئرویز نے بارہ ہزار افراد کے روزگار ختم کرنے کااعلان کیا ہے۔ برطنوی خبرایجنسی کے مطابق برطنوی فضائی کمپنی کا کہنا ہے کہ یہ اقدام کمپنی کو درپیش مسائل کی وجہ سے اٹھایا جارہاہے۔

برطانوی کمپنی  نے ٹریڈ یونینز کو ری سٹرکچرنگ اور ملازمتوں کے خاتمے کا بھی بتادیا ہے۔

دوسری جانب پانچ سو چھیاسی نئی ہلاکتوں کےبعدبرطانیہ کے ہسپتالوں میں کورونا وائرس سے مرنے والوں کی تعداد21ہزارسےتجاوزکرچکی ہے۔

نیشنل ہیلتھ سروسز کے مطابق انگلینڈ میں552 ، سکاٹ لینڈ میں ستر جبکہ ویلز میں سترہ افراد ہلاک ہوئے۔۔۔

برطانوی میڈیاکےمطابق7ہزارسےزائداموات کیئرہاوسزاور گھروں میں بھی ہوچکی ہیں

برطانوی حکومت کےترجمان کے مطابق کورونا وائرس کے دوسرے فیز میں پھیلاؤ کے خدشے کے پیش نظر لاک ڈاؤن میں نرمی کاابھی کوئی امکان نہیں ہے۔

ایک رپورٹ کےمطابق برطانیہ میں کوروناوائرس کے پھیلاؤکاخطرہ برقرارہےلیکن ہسپتالوں کے اندراموات میں کمی دیکھنےمیں آئی ہے۔

ادھرسکاٹ لینڈ کی حکومت نے سفر کے دوران ماسک پہننے کو ضروری قرار دے دیا ہے۔

لاک ڈاؤن کی خلاف ورزی کرنے پر اسوقت تک برطانیہ میں ساڑھے تین ہزار افراد کو جرمانہ عائد کیا جاچکا ہے ۔

ایک سروے کے مطابق برطانیہ کے دوتہائی عوام لاک ڈاون میں نرمی کے مخالف ہیں اور کام پر واپس جانے سے تشویش کا شکار ہیں۔

مزید :

برطانیہ -بزنس -کورونا وائرس -