کرونا کے باعث عید الفطر پر کوئی فلم ریلیز نہیں ہوسکے گی

کرونا کے باعث عید الفطر پر کوئی فلم ریلیز نہیں ہوسکے گی

  

لاہور(فلم رپورٹر)شوبز کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والی شخصیات کاکہنا ہے کہ کرونا وائرس کی وجہ سے عید کی فلموں کی ریلیز نہیں ہوسکے گی بحالی کی جانب گامزن فلمی صنعت کیلئے یہ ایک بہت بڑا جھٹکا ہے لیکن ہمیں ہمت نہیں ہارنی چاہیے اللہ تعالیٰ کے فضل و کرم سے ہم اس وبا سے جلد نجات پا لیں گے۔شوبز شخصیات نے کہا کہ کرونا وائرس کے خاتمے کے بعد بین الاقوامی فلم انڈسٹری کا مقابلہ کرنے کیلئے ہمیں عملی اقدامات کرنا ہوں گے بدقسمتی سے آج بھی فلم انڈسٹری میں لوگ سرمایہ کاری کیلئے تیار نہیں تاہم چند میڈیا اداروں کی فلم انڈسٹری کو اپنے پاؤں پر کھڑا کرنے کی کوششیں قابل تعریف ہیں۔شوبز شخصیات نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ پاکستانی فلم انڈسٹری سالوں نہیں بلکہ مہینوں اور دنوں میں اپنے پاؤں پر کھڑی ہو جائے کیونکہ فلم انڈسٹری کی مضبوطی ہی اداکاروں کی مضبوطی ہے۔ چند مفاد پرست لوگوں کی وجہ سے فلم انڈسٹری کو نقصان پہنچ رہا ہے،ہمیں مفاد پرست لوگوں کوبے نقاب کرنا ہو گاجو انڈسٹری کی جڑیں کاٹ رہے ہیں۔ہماری کچھ فلمیں کامیاب تو ضرور ہوئی ہیں مگر ان تمام فلموں کی موسیقی لوگوں کو متاثر کرنے میں ناکام رہی ہے۔ہمیں فلمی موسیقی کو بہتر بنانے کے لئے بھی فوری اور جنگی بنایادوں پر اقدامات کرنا ہوں گے ماضی میں بنائی جانے والی فلموں کی اکثریت موسیقی کی وجہ سے کامیاب قرار پائی۔شوبز شخصیات نے کہا ہے کہ فلمی صنعت کی تباہی نے بھی میوزک انڈسٹری کو مشکلات سے دو چار کیا ہے اب فلم انڈسٹری تو چل پڑی ہے مگر فلمی موسیقی پر ابھی تک زیادہ فوکس نہیں کیا جا رہا ہے۔ حکومت بھی میوزک انڈسٹری کی بحالی کیلئے اقدامات نہیں کر رہی۔ ہمارے ہاں یہ وطیرہ بن چکا ہے کہ جب تک کہ گلوکار پر انڈیا کی چھاپ نہ لگے اس وقت تک اسے اہمیت نہیں دی جاتی۔

اور ہمارا میڈیا بھی تب تک لفٹ نہیں کراتا چاہے آپ کتنے ہی اچھے گلوکار کیوں نہ ہوں پہلے میڈیا اتنا وسیع نہیں تھا پھر بھی میوزک کو سپورٹ کرتا تھا۔ماضی میں ہمارے موسیقار اور گلوکاروں نے پوری دنیا میں اپنی صلاحیتوں کا لوہا منوایا۔شاہد حمید،شان،معمر رانا،شاہدہ منی،میگھا،ماہ نور،مسعود بٹ،اچھی خان،جرار رضوی،نادیہ علی،ہانی بلوچ،مایا سونو خان،عامر راجہ،آغا قیصر عباس،سہراب افگن،حاجی عبد الرزاق،یار محمد شمسی صابری،بینا سحر،ثناء بٹ،سدرہ نور،بی جی، عباس باجوہ،ندا چوہدری،ہنی شہزادی،اسد نذیر،نادیہ جمیل،عقیل حیدر،گلفام،طاہر انجم،طاہر نوشاد،ڈاکٹر اجمل ملک،ملک طارق،ارشد چوہدری،ڈیشی راج،آفرین خان،آشا چوہدری،احسن خان،نیلم منیر،رزکمالی،وہاج خان،اسد مکھڑا،گڈوکمال،جہانزیب علی،ثمینہ بٹ،ناصر چنیوٹی،تابندہ علی،بابرہ علی،قیصر لطیف،ذیشان منیر،سلیم بزمی، لاڈا،ظفر عباس کھچی،مومنہ بتول،عائشہ جاوید،عارف بٹ،عاصم جمیلِ،آغا حیدر،حمیرا،عینی رباب،عروج،روبی انعم،اظہر بٹ اور رضی خان نے کہا کہکسی بھی شعبہ کی ترقی کیلئے سرمایہ کاری بہت ضروری ہوتی ہے مگر بدقسمتی سے یہاں پر لوگ سرمایہ کاری کیلئے تیار نہیں جو اصل مسائل کی وجہ ہے۔شوبز شخصیات نے کہا کہ یہ بات خوش آئند ہے کہ اب پڑھے لکھے لوگ جدید ٹیکنالوجی کے ساتھ فلمیں تیار کررہے ہیں جو عوام میں مقبولیت بھی حاصل کررہی ہیں۔

مزید :

کلچر -