جامعہ سندھ کی طرف سے کورونا ٹیسٹنگ لیبارٹری قائم کرنے کا فیصلہ

جامعہ سندھ کی طرف سے کورونا ٹیسٹنگ لیبارٹری قائم کرنے کا فیصلہ

  

حیدرآباد(بیورورپورٹ)جامعہ سندھ کی طرف سے کورونا ٹیسٹنگ لیبارٹری قائم کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، کورونا وائرس کے خلاف جاری جنگ میں سندھ یونیورسٹی اپنے حصے کا بھرپور کردار ادا کر رہی ہے۔کورونا وائرس کی موجودہ صورتحال میں جامعہ سندھ جہاں طلباء کے تعلیمی مستقبل کے لیے کوشاں ہے اور تعلیمی پلان اے اور پلان بی پر کام کر رہی ہے وہیں کورونا وائرس کے خلاف جاری جنگ میں بھی اپنا بھرپور کردار ادا کر رہی ہے، اس وباء سے بچاؤ کے لیے سینیٹائیزر تیار کرنے، آن لائن آگاہی سیمینارز منعقد کرنے، چائنہ کے تعلیمی اداروں کے تعاون سے اسینشل ڈیوٹیز پر مامور ملازمین کی حفاظت کے لیے سرجیکل ماسکس کا انتظام کرنے سمیت دیگر کوششوں کے بعد اب یونیورسٹی میں کورونا ٹیسٹنگ لیبارٹری قائم کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے، یہ فیصلہ شیخ الجامعہ سندھ پروفیسر ڈاکٹر فتح محمد برفت کی زیرصدارت منعقدہ ویڈیو لنک اجلاس میں کیا گیا، اجلاس میں کیمسٹری، بایو کیمسٹری، اینالاٹیکل کیمسٹری، مائیکروبایولاجی، بایو ٹیکنالوجی، فارمیسی اور سائکالوجی سمیت مختلف شعبوں کے سائنسدانوں اور ماہریں نے بڑی تعداد میں شرکت کی، اس سلسلے میں ڈاکٹر سرفراز علی تنیو، ڈاکٹر ایاز علی سموں، ڈاکٹر ذوالفقار لغاری، ڈاکٹر عقیل بھٹو اور ڈاکٹر قمر عباس پر مشتمل پانچ رکنی کمیٹی تشکیل دی گئی ہے جو کورونا ٹیسٹنگ لیبارٹری کے قیام کے لیے اپنے تجربات اور یہ ٹیسٹ کرنے والی دیگر لیبارٹریز سے حاصل شدہ معلومات کی بنیاد پر پروپوزل تیار کرے گی جس کے تحت یونیورسٹی کے متعلقہ فورمز کی منظوری سمیت تمام قانونی لوازمات پورے کر کے حکومت سندھ، ہائر ایجوکیشن کمیشن اسلام آباد اور ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن سمیت متعلقہ اداروں سے خط و کتابت کر کے لیبارٹری مٹیریل، ٹیسٹ کٹس، حفاظتی لباس سمیت مطلوبہ لازمی سامان کے لیے ان کا تعاون حاصل کیا جائے گا۔شیخ الجامعہ سندھ پروفیسر ڈاکٹر فتح محمد برفت نے اپنے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ لاک ڈاؤن کی اس صورتحال میں بھی سندھ یونیورسٹی آن لائن اجلاسوں کے ذریعے مسلسل کام کر رہی ہے، انہوں نے کہا کہ سندھ یونیورسٹی کے تمام شعبوں کے اساتذہ انتہائی قابل اور اپنے سبجیکٹس کے ماہر ہیں، جنہوں نے ہمیشہ جذبے سے کام کیا ہے، موجودہ صورتحال میں بھی ان کا جذبہ دیکھنے جیسا ہے، وہ اپنی یونیورسٹی، اس میں زیر تعلیم طلباء سمیت ملک کی بہتری کے لیے اپنے حصے کا کردار ادا کرنے کے لیے مکمل طور پر تیار ہیں، اساتذہ کا یہ تعاون قابل فخر ہے، انہوں نے کہا کہ یونیورسٹی کی جانب سے تعلیمی پلان اے اور پلان بی پر تیاریاں تقریباً مکمل ہیں، حکومت کی طرف سے جو بھی فیصلہ ہوتا ہے اور جو بھی گائیڈ لائن ملتی ہے اس کے مطابق فوری پیش رفت کی جائے گی، انہوں نے کہا کہ جامعہ سندھ کے سائنسدانوں کی محنتیں اور صلاحیات مثالی ہیں، انہوں نے اپنے تجربات کے ذریعے ہمیشہ نئی اور منفرد ایجادات کی بنیاد ڈالی ہے اور تحقیق کی نئی راہیں روشن کی ہیں، انہیں امید ہے کہ ان سائنسدانوں کی زیر نگرانی قائم ہونے والی کورونا ٹیسٹنگ لیبارٹری موجودہ صورتحال میں حکومت کی طرف سے جاری کوششوں میں کافی مددگار ثابت ہوگی، وی سی نے آن لائن اجلاس میں شریک یونیورسٹی کے تمام سائنسدانوں کے تعاون کا شکریہ بھی ادا کیا، اجلاس میں جامعہ سندھ کے رجسٹرار ڈاکٹر امیر علی ابڑو، ڈین فیکلٹی آف فارمیسی پروفیسر ڈاکٹر عبداللہ دایو سمیت مختلف شعبوں کے سربراہان، سائنسدانوں اور ماہرین ڈاکٹر محمد یار کھاوڑ، ڈاکٹر شہاب الدین میمن، ڈاکٹر طفیل حسین شیرازی، ڈاکٹر ذوالفقار لغاری، ڈاکٹر غلام اصغر ماکا، ڈاکٹر ظفر حسین ابوپوٹو، ڈاکٹر نسیم اسلم چنہ، ڈاکٹر قمر عباس، ڈاکٹر ایاز علی سموں، ڈاکٹر سرفراز علی تنیو، ڈاکٹر عقیل بھٹو، ڈاکٹر نجمہ میمن، ڈاکٹر ذیشان بھٹی و دیگر نے شرکت کی۔

مزید :

صفحہ آخر -