"ویکسین نہیں ہے،کورونا ہمارے درمیان گردش کرتا رہے گا"، وہ ملک جہاں پارلیمنٹ نے لاک ڈاون ختم کرنے کی منظوری دے دی

"ویکسین نہیں ہے،کورونا ہمارے درمیان گردش کرتا رہے گا"، وہ ملک جہاں پارلیمنٹ ...

  

پیرس(ڈیلی پاکستان آن لائن) کورونا وائرس نے امریکا اور یورپ کے کئی ملکوں میں تباہی مچادی ہے، تاہم صورتحال میں قدرے بہتری دیکھتے ہوئے مختلف حکومتیں لاک ڈاون اٹھانے کی بھی بات کررہی ہیں۔ اس حوالے سے فرانسیسی وزیراعظم ایڈورڈ فلپ نے پارلیمان میں لاک ڈاون ختم کرنے کا اپنا پلان پیش کیا ہے جسے منظور کرلیا گیا۔

رائٹرز کے مطابق فرانسیسی وزیراعظم ایڈوارڈ فلپ نے11مئی کو لاک ڈاون کو ختم کرنے کا پلان پیش کیاہے۔

پارلیمنٹ سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم نےکہا11 مئی سے کاروبار کھول دیئے جائیں گے تاہم ریسٹورنٹ، کیفے اور بڑے کمرشل سنٹرز بند رہیں گے۔

اپنے خطاب میں انکاکہناتھا11مئی کو سکول کھولے جائیں گئے جبکہ بچوں کی حاضری والدین کی مرضی پر منحصر ہوگی۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ۔۔18 مئی کو جن اضلاع میں وائرس کا پھیلاو کم ہو جائے گا وہاں کالجز بھی اوپن ہوں گئے لیکن کالجز میں ماسک پہننا ضروری ہو گا۔ ۔۔

وزیر اعظم کایہ بھی کہنا تھا کہ جب تک ہمارے پاس ویکسین نہیں ہے وائرس ہمارے درمیان گردش کرتا رہے گا۔۔لہذا ہمیں وائرس کے ساتھ جینا سیکھنا چاہئے۔

انہوں نے یہ اعلان بھی کیا 11 مئی سے 20 ملین واش ایبل ماسک دستیاب ہوں گئے۔

پبلک ٹرانسپورٹ، ٹیکسی میں ماسک پہننا لازمی ہو گا۔ کھیلوں کے مقابلے فی الحال نہیں ہوں گئے۔

گا۔گیارہ مئی سے ہر ہفتے سات لاکھ لوگوں کے ٹیسٹ کئے جاسکیں گے۔

پارلیمنٹ نے ان کے پلان کی منظوری دے دی ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -کورونا وائرس -