سلیم ملک نے معافی مانگتے ہی اپنا ”ٹریک“ پھر تبدیل کر لیا، نئے بیان میں کیا موقف اختیار کیا؟ جان کر ہر کوئی حیران پریشان رہ جائے

سلیم ملک نے معافی مانگتے ہی اپنا ”ٹریک“ پھر تبدیل کر لیا، نئے بیان میں کیا ...
سلیم ملک نے معافی مانگتے ہی اپنا ”ٹریک“ پھر تبدیل کر لیا، نئے بیان میں کیا موقف اختیار کیا؟ جان کر ہر کوئی حیران پریشان رہ جائے

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان کے سابق ٹیسٹ کرکٹر سلیم ملک نے معافی مانگنے کے بعد ٹریک تبدیل کر لیا ہے جن کا کہنا ہے کہ انہوں نے میچ فکسنگ پر نہیں بلکہ شائقین کی دل آزاری پر معذرت کی تھی۔ جسٹس قیوم رپورٹ پر تو عدالت اور پی سی بی دونوں ہی مجھے بے قصور قرار دے چکے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق ویڈیو لنک پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ جسٹس قیوم رپورٹ کے تحت جن کرکٹرز نے جرمانے ادا کئے وہ بورڈ میں ملازمت اور کوچنگ کررہے ہیں لیکن کلیئر ہونے کے باوجود میرے ساتھ سوتیلی ماں جیسا سلوک کیوں کیا جا رہا ہے؟ مجھے تو لگتا ہے جیسے اس ملک کا شہری ہی نہیں ہوں۔گزشتہ دنوں ویڈیو میں میری معافی کو جس انداز میں پیش کیا گیااس پر حیران ہوں، میں نے میچ فکسنگ پر نہیں بلکہ شائقین کی دل آزاری پر معذرت کی تھی۔

انہوں نے کہا کہ 2008ءمیں عدالت اور پی سی بی دونوں ہی مجھے بے قصور قرار دے چکے ہیں جبکہ انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) یا بورڈ کی جانب سے آج تک مجھے کوئی سوالنامہ نہیں ملا، لندن میں جن روابط کا ذکر ہورہا ہے اس حوالے سے بورڈ مجھ سے رابطہ کرکے بات کرے گا تو وضاحت دینے کے قابل ہوں گا، مجھے سوالنامہ بھیجا گیا آئی سی سی اور پی سی بی کے ہر سوال کا جواب دینے کیلئے تیار ہوں۔

انہوں نے کہا کہ جب تک مجھے انصاف نہیں مل جاتا آواز بلند کرتے رہوں گا،مجھے ملازمت کی ضرورت نہیں بلکہ پاکستان کی خدمت کرنا چاہتا ہوں، ضرورت پڑنے پر انسانی حقوق کی تنظیموں، چیف جسٹس اور وزیراعظم سے بھی مدد مانگوں گا۔سلیم ملک نے دعویٰ کیا کہ وزیر اعظم بننے سے پہلے عمران خان ملاقاتوں میں کہتے رہے کہ آپ کے ساتھ ناانصافی ہورہی ہے۔

مزید :

کھیل -