غیرقانونی تارکین وطن کیخلاف کریک ڈاﺅن کا فیصلہ

غیرقانونی تارکین وطن کیخلاف کریک ڈاﺅن کا فیصلہ
غیرقانونی تارکین وطن کیخلاف کریک ڈاﺅن کا فیصلہ

  

کراچی،سکھر(مانیٹرنگ ڈیسک) کراچی اور سکھر میں دہشت گردی کی وارداتوں میں غیر قانونی تارکین وطن کے ملوث ہونے اور وارداتوں کے بعد ان کے کوائف نہ ملنے کے بعد بالآخر انتظامیہ حرکت میں آگئی اور شہر میں آباد بیس لاکھ سے زائد غیر ملکیوں کے خلاف کریک ڈاون کا فیصلہ کیا گیا ہے جس کے لیے جائنٹ ٹاسک فورس تشکیل دی گئی ہے۔نجی ٹی وی چینل کے مطابق کراچی میں غیر قانونی تارکین وطن کے خلاف بالآخرایک بار پھر کارروائی کرنے کا حتمی فیصلہ کر ہی لیا گیا ہے ، اعداد و شمار کے مطابق بیس لاکھ سے زائد تارکین وطن شہر میں آباد ہیں جن میں افغانی، برمی، بنگالی سمیت دیگر شامل ہیںاور اس سلسلے میں ایف آئی اے، اسپیشل برانچ ،پولیس اور نارا کے اہلکاروں پر کو خصوصی ٹاسک دیا گیا ہے اور ہر زون اور ضلع میں خصوصی ٹاسک فورس قائم کی گئی ہے جس کا سربراہ ایس پی یا ڈی ایس پی سطح کا افسر ہوگا۔ ذرائع کے مطابق یہ فیصلہ دہشت گردی کے بعد ملزمان کی شناخت نہ ہونے پر کیا گیا۔دس جولائی کو صدر مملکت کے سیکیورٹی افسر بلال شیخ پر گرومندر کے قریب خود کش حملہ کرنے والے ملزم کی شناخت اس وجہ سے نہیں ہوسکی کیونکہ وہ غیر ملکی تھا اور اس کا کوئی ریکارڈ کسی ادارے کے پاس موجود نہیں ہے۔ چوبیس جولائی کو سکھر میں حساس ادارے کے دفترپر خود کش حملہ کرنے والے چاروں حملہ آوروں کی شناخت بھی نہیں ہوسکی ۔

مزید : کراچی