جاپان میں میکرونی سلاد میں شامل سور کا گوشت کھلانے پر پاکستانی شہری کی گزشتہ دو ہفتوں سے بھوک ہڑتال

جاپان میں میکرونی سلاد میں شامل سور کا گوشت کھلانے پر پاکستانی شہری کی گزشتہ ...
جاپان میں میکرونی سلاد میں شامل سور کا گوشت کھلانے پر پاکستانی شہری کی گزشتہ دو ہفتوں سے بھوک ہڑتال

  


ٹوکیو (اے این این) جاپان میں میکرونی سلاد میں شامل سور کا گوشت کھلانے پر پاکستانی شہری گزشتہ دو ہفتوں سے بھوک ہڑتال پر ہے اور امیگریشن حکا م کی غلطی پر معافی مانگنے کے باوجود بھوک ہڑتال ختم کرنے سے انکار کرتے ہوئے اسے انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزی قرار دیا ہے۔

ایک جاپانی نیوز ویب سائٹ کی رپورٹ کے مطابق ایک پاکستانی مسلمان نے یوکوہاما امیگریشن حکام کے غلطی سے میکرونی سلاد میں سور کے سوکھے ہوئے گوشت کاٹکڑا کھلانے پر یوکوہاما میں گزشتہ دوہفتوں سے بھوک ہڑتال شروع کررکھی ہے ۔ویب سائٹ کے مطابق امیگریشن حکام نے اس اقدام پر معافی بھی مانگ لی ہے لیکن 49سالہ پاکستانی 13اگست سے انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزی کے خلاف بطور احتجاج بھوک ہڑتال پر ہے اورابھی تک وہ صرف پانی پر گزارہ کر رہا ہے۔

ویب سائٹ کے مطابق پاکستانی شہری کو 12اگست کو سور کے گوشت کے سوکھے ہوئے ٹکڑے پر مشتمل لنچ بکس دیا گیا تھا ۔یہ پاکستانی ٹوکیو کے علاقائی امیگریشن بیورو کے کانازاوا وارڈ کے یوکوہاما ضلعی امیگریشن دفتر میں ملک بدری کاانتظار کر رہا ہے۔ امیگریشن حکام کے یہ بتانے سے غفلت کے باعث کہ لنچ بکس میں سور کا گوشت ملا ہوا ہے اب اسے حلال کھانا بھی دیا جارہاہے لیکن اس نے کھانے سے انکار کردیا ہے ۔

مزید : بین الاقوامی