یکم ستمبرسے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں چھ سے ساڑھے سات روپے تک کمی متوقع

یکم ستمبرسے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں چھ سے ساڑھے سات روپے تک کمی متوقع

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک +اے این این) آئل اینڈگیس ریگولیٹری اتھارٹی(اوگرا) نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں چھ سے ساڑھے سات روپے تک کی نمایاں کمی کی سفارش کردی،سمری وزارت پٹرولیم کوارسال،نئی قیمتوں کااطلاق یکم ستمبرسے ہوگا۔تفصیلات کے مطابق اوگرا کی طرف سے وزارت خزانہ کو بھجوائی گئی سمری میں تجویز کیا گیا ہے کہ پٹرول کی قیمت میں 6 روپے 15 پیسے فی لیٹر، ہائی سپیڈ ڈیزل کی قیمت میں 7 روپے 50 پیسے ، لائٹ سپیڈ ڈیزل کی قیمت میں6 روپے 50پیسے ، مٹی کے تیل کی قیمت میں 7روپے10پیسے اور ہائی اوکٹین کی قیمت میں 7 روپے 20 پیسے فی لیٹرکمی کی جائے۔وزارت پٹرولیم کی طرف سے سمری کی منظوری کی صورت میں نئی قیمتوں کااطلاق یکم ستمبر2015ء سے ہوگا۔واضح رہے کہ پٹرلیم مصنوعات کی قیمتوں میں مجوزہ کمی مسلسل دوسرے مہینے بھی کی جارہی ہے ۔گزشتہ ماہ پٹرول کی قیمت میں ایک روپے تین پیسے، لائٹ ڈیزل کی قیمت میں چار روپے 92 پیسے فی لیٹر کمی کی گئی اسی طرح مٹی کے تیل کی قیمت میں چار روپے 83 پیسے اور ہائی اسپیڈ ڈیزل کی قیمت میں دو روپے چھ پیسے فی لیٹر کمی کی گئی تھی جس کے بعد پٹرول کی فی لیٹر قیمت 76.76 روپے، ہائی اسپیڈ ڈیزل کی 85.05 روپے اورمٹی کے تیل کی قیمت 60.11روپے ہو گئی تھی ۔واضح رہے کہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی بین الاقوامی منڈی میں تیل کی قیمتوں میں مسلسل گراوٹ کے پیش نظرکی جارہی ہے ۔ ماہرین نے کہاہے کہ قیمتوں میں کمی کی وجہ تیل کی زیادہ سپلائی ہے۔دوسری جانب نجی ٹی وی کے مطابقبین الاقوامی مارکییٹ میں خام تیل کی قیمت میں کمی کیباعث ایک سال میں درآمدی بل میں حکومت کو 300 ارب روپے سے زائد کی بچت ہوچکی ہے۔اگر رواں مالی سال کی بات کی جائے تو صرف جولائی میں عالمی سپلائرز سے پیٹرولیم مصنوعات کی خریداری پر گذشتہ مالی سال کے مقابلے میں 23 ارب روپے کم خرچ کرنے پڑے۔

مزید : صفحہ اول