4ما ہ میں ایڈمن افسروں کو 12ہزاردرخواستیں مو صو ل ، صرف 27زیرا لتوا ہیں،امین وینس

4ما ہ میں ایڈمن افسروں کو 12ہزاردرخواستیں مو صو ل ، صرف 27زیرا لتوا ہیں،امین ...

لاہور(خصوصی رپورٹ)سی سی پی او لاہور کیپٹن (ر) محمد امین وینس نے کہا ہے کہ گزشتہ چار ماہ کے دوران جب سے ایڈمن افسروں کا پراجیکٹ شروع کیا گیا ہے۔ایڈمن افسروں کو 12ہزار درخواستیں موصول ہوئیں جن میں سے صرف 27درخواستیں زیر التوا ہیں جن پر انکوائری کی جا رہی ہے کیونکہ یہ وہ درخواستیں ہیں جن میں مختلف شہریوں کو نامزد کرتے ہوئے ان کے خلاف سنگین دفعات کے تحت مقدمات درج کرانے کی استدعا کی گئی ہے۔اُنہوں نے کہا کہ ایڈمن افسروں نے اپنی کارکردگی سے یہ ثابت کیا ہے کہ وہ عام آدمی کی خدمت کے جذبے سے سرشار ہیں ،جس کا منہ بولتا ثبوت جہانزیب ہے جو کچھ روز قبل تھانہ گلبرگ میں اپنے کسی کام کے سلسلے میں گیا تھا اور پولیس رویے سے اس قدر متاثر ہوا کہ آج تھانہ کلچر میں واضح تبدیلی خاص کر ایڈمن افسر گلبرگ کے حلیم اور ذمہ دارانہ رویے کے اعتراف میں میرے دفتر پھول لے کر آیا ۔شہری کا کہنا تھا کہ خدا کرے جس طرح تھانہ گلبرگ کی پولیس کا رویہ ہے وہ تمام لاہور بلکہ پنجاب بھر کی پولیس کا ہو جائے تو جرائم پیشہ افراد کو چھپنے کی جگہ نہیں ملے گی۔اُنہوں نے مزید کہا کہ دوسروں کو عزت دے کر ہی عزت ملتی ہے اور اگرآپ چاہتے ہیں کہ عوام پولیس کی عزت کرے تو پھر آپ کو شہریوں کو عزت دینا ہوگی ۔ تھانوں میں اپنے مسائل کے حل کے لئے آنیو الے شہریوں سے نہ صرف خوش اخلاقی سے پیش آنا ہو گا بلکہ ان کے مسائل کو اپناذاتی مسئلہ سمجھ کر حل کرنا ہو گا۔انہوں نے کہا کہ شہر میں جرائم کنٹرول کرنے اور امن و امان کی فضا کو برقرار رکھنے کے لیے تشکیل دی گئی بیٹس کے افسروں میں انڈرائیڈ فون اورجدید ٹیکنالوجی کی فراہمی کو ترجیحی بنیادوں پر یقینی بنایا جا رہا ہے اور ایڈمن افسروں کو جدید ٹیکنالوجی کے حوالے سے بیٹ افسروں اور کانسٹیبلز کو تربیت دینے کے لیے ماسٹر ٹرینرز کے طور پر کام کرنا ہو گا۔ ان خیالات کا اظہار اُنہوں نے گزشتہ روز پولیس لائنز قلعہ گجر سنگھ میں ایڈمن افسروں کی کارکردگی کا جائزہ لینے کے لیے منعقدہ اجلاس سے خطاب کرتے ہو ئے کیا۔ اجلاس میں ڈی آئی جی انویسٹی گیشن سلطان چوہدری،ڈی آئی جی انویسٹی گیشن ڈاکٹر حیدر اشرف و دیگر بھی موجود تھے۔

، ایس پی سی آئی اے محمد عمر ورک سمیت مختلف ڈویژنل ایس پیز بھی موجود تھے۔ سی سی پی او نے کہا کہ بیٹ سسٹم کے نفاذ کا مقصد لوگوں کو ان کے گھر کی دہلیز پر انصاف کی فراہمی اور ان میں احساس تحفظ کو مزید فروغ دیناہے ۔ اس نیک مقصد کے لئے جو بیٹ افسران نیک نیتی اور فرض شناسی سے کام کریں گے ان کی ہر سطح پر نہ صرف حوصلہ افزائی کی جائے گی بلکہ انہیں انعامات سے بھی نوازا جائے گا لیکن اس نظام میں خرابی پیدا کرنے والے بیٹ افسران کو محکمہ میں رہنے کا کوئی حق نہیں ہو گا۔ کیپٹن(ر) محمد امین وینس نے کہا کہ ایڈمن افسروں کو بیٹ سسٹم کامیاب بنانے کیلئے بیٹ افسران کی ہر ممکن امداد اور راہنمائی کرنے کے ساتھ ساتھ ان کی بیٹ سے جو بھی شہری کوئی مسئلہ لے کر تھانے آئے تومتعلقہ بیٹ افسر کو فور ی طور پر اس بارے میں مطلع کیا جائے تاکہ وہ اس شہری کے مسئلہ کے فوری حل کے لئے اپنا کلیدی کردار ادا کرے۔

مزید : علاقائی