جنوبی ایشیا ئی ممالک اقتصادی یونین وقت کی ضرورت ہے، عبدالرؤف عالم

جنوبی ایشیا ئی ممالک اقتصادی یونین وقت کی ضرورت ہے، عبدالرؤف عالم

  

 کراچی( آن لائن )ایف پی سی سی آئی کے صدر عبدالرؤف عالم نے کہا ہے کہ ترقی کیلئے سارک کا پلیٹ فارم سب سے بہتر ہے۔ جنوب ایشیائی اقتصادی یونین وقت کی ضرورت ہے جس کے بغیر غربت، جہالت اور بے روزگاری کم نہیں ہو گی اور نہ ہی علاقائی ممالک ترقی کر سکتے ہیں۔ علاقائی ممالک پر مشتمل اکنامک یونین بنانے اور اسکی کامیابی کیلئے وفاقی چیمبر حکومت سے ہر ممکن تعاون کرے گا۔ جنوبی ایشیاء میں سرعت سے ترقی کرنے کے تمام لوازمات موجود ہیں جس سے کروڑوں افراد کوہمیشہ کیلئے غربت کی دلدل سے نکالا جا سکتا ہے۔ ایف پی سی سی آئی کے صدر عبدالرؤف عالم نے یہاں جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا کہ جنوبی ایشیاء میں دنیا کی اکیس فیصد آبادی رہتی ہے جبکہ زمین کا تین فیصد حصہ بھی انہی ممالک پر مشتمل ہے جسکا حصہ عالمی تجارت میں 9.12 فیصد ہے۔ ان ممالک کے مابین تنازعات نے اس خطے کی ترقی روک رکھی ہے جنھیں جلد از جلد حل کرنے کی ضرورت ہے جسکے بعد علاقائی تعاون کی وجہ سے اس خطے کی سماجی و اقتصادی ترقی ساری دنیا کیلئے ایک مثال بن جائے گی۔ وسائل سے مالا مال سارک ممالک کے پاس وسیع زرعی اراضی، معدنی وسائل، گہرے سمندر، مختلف شعبوں کے ماہرین اورنوجوانوں کی وسیع تعداد موجود ہے جنھیں مل کر استعمال کیا جائے تو اس سے ایک ارب سے زیادہ افراد غربت سے نکل آئینگے۔ عبدالرؤف عالم نے کہا کہ بعض اختلافات ترقی کے راہ میں حائل ہیں جنھیں تمام ممالک مل کر حل کریں تاکہ ترقی کا سفر شروع کیا جا سکے کیونکہ سارک کو بنے ہوئے تیس ہو گئے ہیں مگر یورپی یونین اور آسیان سمیت مختلف بلاکس کے مقابلہ میں باہمی تجارت اور مسائل کے حل میں یہ بہت پیچھے ہے جو کہ ہماری بد قسمتی ہے۔ انھوں نے کہا کہ علاقائی انضمام ترقی کی کنجی ہے ۔

جس کیلئے سب کو مل کر کوششیں کرنا ہونگی۔۔#/s#

مزید :

کامرس -