محکمہ ماہی پروری کی فش فارم بنانے کیلئے ریتلی ، سیلابی زمین کے استعمال سے اجتناب کی ہدایت

محکمہ ماہی پروری کی فش فارم بنانے کیلئے ریتلی ، سیلابی زمین کے استعمال سے ...

  

راولپنڈی (این این آئی)محکمہ ماہی پروری نے فش فارم بنانے کیلئے ریتلی ، سیلابی زمین کے استعمال سے اجتناب کی ہدایت کرتے ہوئے کہاہے کہ فش فارمرز کسی بھی جگہ پر مچھلی کی افزائش نسل کیلئے فش فارم قائم کرنے سے قبل محکمہ کے ماہرین سے ضروری مشاورت یقینی بنائیں تاکہ انہیں بعد ازاں کسی پریشانی یامشکل کاسامنا نہ کرناپڑے۔ محکمہ ماہی پروری کے ذرائع نے بتایاکہ مچھلی فارم کی کامیابی کا دار ومدار زمین کے درست چناؤ پر منحصر ہے لہٰذا ایسی زمین جس میں پانی کے دیر تک ٹھہراؤ کی صلاحیت ہو وہی زمین مچھلی فارم کیلئے موزوں ہوتی ہے کیونکہ ریتلی زمین میں پانی نہیں ٹھہر سکتا اس لئے فش فارمرز کسی بھی ایسی جگہ پر مچھلی فارم قائم نہ کریں جہاں زمین ریتلی ہو ۔ انہوں نے بتایاکہ مچھلی فارم کیلئے انتخاب کردہ زمین سیلابی پانی سے محفوظ ہونی چاہیے انہوں نے فش فارمرز کو ہدایت کی کہ وہ مچھلی فارم بنانے کیلئے جس جگہ کا چناؤ کریں وہاں مچھلی کی خوراک کے اجزاء ، گوبر ، چاول کی پھک، سبز چارہ وغیرہ بھی دستیاب ہونا چاہیے ۔

انہوں نے بتایاکہ اس ضمن میں محکمہ ماہی پروری نے خصوصی سائل ٹیسٹنگ لیبارٹریز قائم کررکھی ہیں لہٰذا فش فارمرز متعلقہ جگہ کی مٹی کے نمونے لیبارٹری سے تجزیہ کروانے کے بعد فش فارم کی تعمیر شروع کریں تاکہ مچھلی کی بہتر افزائش سمیت مناسب منافع کاحصول بھی یقینی ہو سکے

مزید :

کامرس -