جامکے چٹھہ اور گردونواح میں سود کا کاروبار عروج پر پہنچ گیا

جامکے چٹھہ اور گردونواح میں سود کا کاروبار عروج پر پہنچ گیا

  

جامکے چٹھہ(نمائندہ پاکستان)جامکے چٹھہ اور اس کے گردونواح میں سودخوری کا دھندہ عروج پر سود خور ککھ سے لاکھ پتی اور لاکھ پتی سے کروڑ پتی بن گئے ۔تفصیلا ت کے مطابق جامکے چٹھہ اور اس کے گردنواح میں سودپر رقم دینے کا دھندہ عروج پر ہے ایک لاکھ روپے پر 55 ہزور روپے سالانہ سود وصول کیا جا رہاہے کاشت کار ،غریب عوام اور مجبور لوگ سود پر رقم لے کر اپنی ضرورت پوری کرتے ہیں جبکہ سود دینے والوں نے عوام کو کنگھال کر کے رکھ دیا ہے غریب کاشت کارجنہوں نے سو د پر رقمیں لے رکھی تھیں اصل رقم سے زیادہ واپس کرنے کے باوجود بھی ان پر سودی رقم ختم نہیں ہوتی ہے جو کہ غریبوں کو زندہ درگور کرنے کے مترادف ہے ۔اس کے علاوہ سودی کاروبار کرنے والے غریب کسانوں کو زرعی ادویات اور کھادیں بھی ادھار پر دیتے ہیں اور فصل پکنے پر کسانوں سے ان کی فصل من مرضی کے ریٹ پر وصول کرتے ہیں جس سے یہ سودی کاروبار کرنے والے سودخور لاکھوں کا منافع کما کر کروڑ پتی بن چکے ہیں۔

گزشتہ سالوں میں فصلوں پر اسپرے کرنے والے دیہاڑی دار آج سودی کاروبار کر کے کروڑ پتی بن چکے ہیں ۔اہلیان علاقہ نے اعلیٰ احکام سے اپیل کی ہے کہ غریب کسانوں کو سود پر رقم اور سود پر زرعی دویات اور کھادیں دینے والوں کے خلاف کاروائی کریں ۔

سود کا کاروبار

مزید :

علاقائی -