مختلف شہروں میں دوسرے روز بھی تیز ہوا کیساتھ بارش، موسم خوشگوار

مختلف شہروں میں دوسرے روز بھی تیز ہوا کیساتھ بارش، موسم خوشگوار

عبدالحکیم‘ محسن وال‘ کوٹ ادو ‘ راجن پور ‘ دھنوٹ ‘ لیاقت پور ( نمائندگان ) جنوبی پنجاب کے مختلف شہروں میں دوسرے روز بھی تیز ہوا کیساتھ بارش اور کہیں رم جھم ہوئی ‘ فصلوں کو نقصان ہوا ۔ مکان ‘ چھتیں گرنے کے واقعات بھی رونما ہوئے مگر جانی نقصان نہ ہوا ‘ جبکہ پانی جمع ہونے سے شہریوں کو آمد ورفت میں شدید مشکلات کا سامنا رہا ۔ عبدالحکیم سے نمائندہ خصوصی کے مطابق عبدالحکیم اور گردونوح میں پہلے تیز آندھی آئی تیز آندھی سے کماد جوار مکئی کی فصل کو اور باغات کو شدید نقصان پہنچا جبکہ بڑے بڑے تن آور درخت ٹوٹ کر گر پڑے بجلی کی ترسیل بھی کافی دیر تک معطل رہی ، تیز آندھی کے بعد کیں ہلکی اور کہیں تیز بارش سے موسم خوش گوار ہو گیا ۔ محسن وال سے نامہ نگار کے مطابق گزشتہ روزمیاں چنوں محسن وال میں موسلا دھاربارش کے بعد شہر کی تمام سٹرکوں پر پانی جمع ہو گیا جس سے متعدد شہریوں کی موٹر سائیکل اور کاریں پانی میں بند ہو گیءں بعد ازاں مکینکوں نے گاڑیوں کی مرمت کے لیے مرضی کے ریٹ وصول کرنے شروع کر دئیے جس کی وجہ سے شہریوں کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑاشہریوں چوہدری عادل نسیم قریشی رانا کامران چوہدری آصف ڈاکٹر عبد الروف چوہدری عاطف محمد وقاص چوہدری فاروق گجر کا اس بارے میں کہنا تھا کہ موسلا دھار بارش کے بعد سٹر کیں تالاب کا منظر پیش کرنے لگتی ہیں لیکن انتظامیہ کے کان پر جوں تک نہیں رینگتی۔ ناقص سیوریج پلان مرتب کرنے اہلکاروں کو کہٹرے میں لایا جائے۔ کوٹ ادو سے نامہ نگار کے مطابق کو ٹ ادو شہر اور اسکے گر د ونواح میں گر د آلود ہو اؤں کے بعد دس گھنٹے سے زائد ہو نے والی بارش کی رم جھم سے موسم خوشگوار ہو گیا ،گر می اور حبس کا زور ٹو ٹ گیا ،لیکن واپڈا حکام نے اپنی روش نہ بدلی گزشتہ پو ری رات شہر یوں نے بغیر بجلی کے گزاری۔ جتوئی سے نامہ نگار کے مطابق جتوئی کے شہر بھر میں بارش کا پانی جمع‘ٹی ایم اے کی نااہلی کا منہ بولتا ثبوت بارش کا پانی گلیوں محلوں سڑکوں پر پانچ فٹ سے زیادہ اونچائی تک جمع ہے‘عملہ گھر بیٹھے تنخواہیں لے رہا ہے او ر اعلیٰ حکام خاموش ہیں۔ راجن پور سے ڈسٹرکٹ رپورٹر کے مطابق راجن پور ،فاضل پور اور داجل سمیت ضلع بھر کے مختلف شہروں میں تیز آندھی کے ساتھ موسلادھار بارش ،نشیبی علاقے زیرآب ،سڑکوں پر کئی کئی فٹ پانی جمع ہو گیا شہریوں کا گذرنا محال ہو گیا ،گذشتہ شام چھ بجے تیز آندھی کے باعث کئی علاقوں میں عارضی چھتیں گر گئیں رات گئے موسلا دھار بارش سے ہر طرف جل تھل ہوگئی کئی علاقوں میں بارش سے کئی کئی فٹ پانی جمع ہونے سے سڑکیں اور گلیاں تالاب کا منظر پیش کر نے لگی ہیں نکاسی آب سسٹم تباہ ہو نے سے شہر میں جگہ جگہ بارش کا پانی جمع ہو چکا ہے تحصیل میو نسپل ایڈمنسٹریشن کے عملہ صفائی کی نااہلی سے دس گھنٹے گذرنے کے باوجود شہر کی سڑکات سے پانی نہیں نکالا جاسکا ہے دوسری جانب کوہِ سلیمان کے پہاڑی سلسلہ پر بارش کے نتیجہ میں ’’کا ہا سلطان ‘‘ کے نالہ میں 15 ہزار کیوسک کاریلہ راجن پور کے زمینی علاقوں کی جانب بڑھنا شروع ہوگیا ہے محکمہ انہار ہل ٹورنٹ کے ترجمان کے مطا بق پندرہ ہزار کیوسک سے کسی نقصان کااندیشہ نہیں ہے ۔ دھنوٹ سے نمائندہ خصوصی کے مطابق دھنوٹ میں گزشتہ شب موسلا دھار بارش ہوئی جس کی وجہ سے محلہ مغلپورہ میں محمدبلال بھٹی اور محمد قاسم بھٹی کے مکان گر گئے محلہ سیرانی دیگر جگہوں پر دیواریں گر گئیں اللہ تعالیٰ کے کرم سے کوئی جانی نقصان نہیں ہو امتعدد محلوں میں سیوریج بند گلیوں میں کیچڑ و پانی کا راج ہے۔تاہم گرمی کی شدت میں کمی اور موسم خوشگوار ہو گیا ۔ لیاقت پور سے نمائندہ پاکستان کے مطابق لیاقت پور میں مسلسل دو روز وقفے وقفے سے ہونے والی موسلا دھار بارش نے شہر بھر کی تمام سڑکوں ، گلیوں,محلوں کو کیچڑ زدہ کر دیا ہے کئی نشیبی علاقوں میں اب بھی دو سے تین فٹ تک پانی کھڑا ہے اللہ والا چوک ، اللہ آباد جانے والی سڑ ک بھی بارش کے پانی سے بھری ہو ئی ہے اسی طرح واپڈا چوک ، کمہار کالونی چوک ، فوجی کالونی چوک ، چوک گھنٹہ گھر ، ریلوے چوک ، ریلوے بازار پر بھی پانی اور کیچڑ نے شہریوں اور راہگیروں کو مشکلات سے دو چار کر رکھا ہے صدر سٹیزن ویلفئر سوسائٹی ظفر حسین چوہان نے ٹی ایم اے کے حکام سے فوری اصلاح احوال کا مطالبہ کیا ۔

مزید : ملتان صفحہ آخر