19 ہزار 6 سو شناختی کارڈز جعلی ہونے کا انکشاف

19 ہزار 6 سو شناختی کارڈز جعلی ہونے کا انکشاف
19 ہزار 6 سو شناختی کارڈز جعلی ہونے کا انکشاف

  


اسلام آباد(آئی این پی) نادرا کی جانب سے شناختی کارڈز کی ازسرنوتصدیق کے عمل میں 42 لاکھ 29 ہزارلوگوں نے ایس ایم ایس اور 79 ہزار 600 افراد نے ہیلپ لائن کے ذریعے اپنے شناختی کارڈزکی تصدیق کرائی۔ وزیرداخلہ چوہدری نثارکی جانب سے ملامنصورکے پاس پاکستانی شناختی کارڈ ہونے کے انکشاف کے بعد نادرا کو تمام شناختی کارڈز کی ازسر نو تصدیق کا حکم دیاگیاتھااور نادرا کو اس عمل کیلئے 6 ماہ کی مہلت دی گئی تھی۔

الیکشن کمیشن کے احکامات نظر انداز ، سیاسی جماعتیں گوشوارے جمع کرانے میں ناکام

ذرائع کے مطابق نادرا کی جانب سے شناختی کارڈز کی تصدیق کیلئے61 لاکھ 62 ہزارایس ایم ایس بھیجے گئے، تصدیقی عمل کے دوران 41 ہزار 300 افراد کی غیرمتعلقہ خاندان میں شامل ہونے کی تصدیق ہوئی، ابھی تک 5 کروڑ 63 لاکھ شناختی کارڈزکی تصدیق ہوچکی ہے جب کہ 19 پزار 600 شناختی کارڈز جعلی ہونے کا انکشاف ہوا ہے جن کے کیسزانٹیلی جنس ایجنسیوں کو بھیج دیے گئے ہیں۔

روزنامہ پاکستان کی تازہ ترین اور دلچسپ خبریں اپنے موبائل اور کمپیوٹر پر براہ راست حاصل کرنے کیلئے یہاں کلک کریں‎

سیکیورٹی اداروں کی رپورٹ کے بعد جعلی شناختی کارڈز منسوخی کافیصلہ کیاجائے گا، نادراکی جانب سے غیر ملکیوں کو رضاکارانہ شناختی کارڈز واپس کرنے کیلئے2ماہ کی ایمنسٹی اسکیم دی گئی تھی جس کافائدہ اٹھاتے ہوئے 334 غیرملکیوں نے ازخودکارڈز واپس کیے جن میں333افغانی اورایک بنگلہ دیشی شامل ہے۔

مزید : اسلام آباد