وزیر اعلیٰ پنجاب نے تمام محکموں ،اتھارٹیز کمپنیوں کی آڈٹ رپورٹس طلب کر لیں

وزیر اعلیٰ پنجاب نے تمام محکموں ،اتھارٹیز کمپنیوں کی آڈٹ رپورٹس طلب کر لیں

لاہور(جاوید اقبال228عدیل شجاع) وزیر اعلیٰ پنجاب نے صوبہ کے تمام محکموں ،اتھارٹیز اور کمپنیوں کی سالانہ آڈٹ رپورٹس طلب کر لی ہیں۔ذرائع کے مطابق اس حوالے سے ایوان وزیر اعلیٰ میں مذکورہ اداروں کے سربراہوں سے کہا ہے کہ وہ 2015.16 اور2016.17 کی آڈٹ رپورٹس پیش کریں۔ذرائع کے مطابق دوسری طرف سرکاری اداروں کا آڈٹ کرنے والی نجی کمپنیوں کی تیار شدہ آڈٹ رپورٹس کا بھی ازسر نو جائزہ لینے کی ہدایات جاری کی گئی ہیں۔ ذرائع کے مطابق وزیر اعلیٰ کے احکامات پر محکمہ خزانہ پنجاب نے صوبے میں کام کرنے والی اتھارٹیز، کمپنیز اور دیگر ملحقہ اٹنامس باڈیز کی دوہزار سولہ اورسترہ کی آڈٹ رپورٹ پیش کرنے کا حکم دیا ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ پنجاب میں قائم کمپنیز کا آڈٹ نجی کمپنیوں سے کرایا جارہا ہے جس میں مالی بے ضابطگیوں کو اعلیٰ حکام سے مبینہ طور پر چھا جارہا ہے۔ کمپنیز اور اتھارٹیز کا آڈٹ کرنے والی فرموں کا بھی جائزہ لیا جائے گا کہ ان کی کیا حیثیت ہے۔کمپنیز میں صاف پانی کا نام سر فہرست ہے جبکہ پیمکو اور ایل ڈی اے سمیت واسا بھی اس عمل کا حصہ ہو گا۔ دریں اثناء ایجوکیشن ، ہیلتھ، زراعت اور آبپاشی کے محکموں کی بھی خصوصی طور پر آڈٹ رپورٹس طلب کی گئی ہیں جن میں پبلک اکاونٹس کمیٹی کے اجلاس میں ہونے والے پیروں پر بحث کی رپورٹ بھی محکمہ خزانہ پنجاب کو پیش کی جائے گی۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ اور صوبہ میں شفاف پنجاب کے نام سے مہم بھی شروع کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔جس میں محکموں کی شفاف آڈٹ رپورٹس کا حوالہ بھی دیا جائے گا۔

مزید : صفحہ آخر