بھارت، گرو گرمیت کو بداخلاقی کیس میں 20سال قید کی سزا، 30لاکھ جرمانہ

بھارت، گرو گرمیت کو بداخلاقی کیس میں 20سال قید کی سزا، 30لاکھ جرمانہ

چندی گڑھ(مانیٹرنگ ڈیسک )بھارتی عدالت نے پیروکار خواتین سے بد اخلاقی کے مجرم ڈیرا سچا سودا تنظیم کے سربراہ کو 20 سال قید کی سزا سنادی، گرمیت سنگھ کو بھارتی ریاست ہریانا کی روہتک جیل میں لگی خصوصی عدالت میں سزا سنائی گئی، تاہم گرمیت کے وکلاء نے فیصلے کو ہائیکورٹ میں چیلنج کرنے کا فیصلہ کیا ہے، فیصلے کیخلاف گرو کے حامیوں نے سرسا میں کئی گاڑیاں بھی جلا دیں۔تفصیلات کے مطا بق روہتک جیل میں لگائی گئی خصوصی عدالت میں گزشتہ روز مقدمہ کی سماعت کے دوران گرمیت سنگھ جج کے سامنے رو پڑا اور رحم کی در خو ا ست کرتا رہا تاہم عدالت نے گرمیت کوبداخلاقی کے دو کیسز میں دس دس سال قید اور پندرہ پندرہ لاکھ جرمانے کی سزا سنا دی۔ اس موقع پر ہریانہ اور مشرقی پنجاب میں ہائی الرٹ تھا، شدید کشیدگی والے علاقوں میں بھارتی فوج نے فلیگ مارچ کیا، امن و امان کی صورتحال خراب کرنیوالوں کو دیکھتے ہی گولی مارنے کا حکم تھا، تعلیمی ادارے بند اور انٹرنیٹ سروسز آج منگل تک کیلئے معطل کردی گئی تھیں۔گرمیت سنگھ کو جمعے کو دو خوا تین کیساتھ بد اخلاقی کا مجرم قرار دیا گیا تھا،جس کے بعد بھارتی ریاستوں ہریانہ اور پنجاب میں ہنگامہ آرائی کے دوران 38 ا فر ا د ہلاک، سیکڑوں زخمی ہوئے ۔ڈیرا سچا سودا نامی گروہ کا گرو گرمیت سنگھ بھارت کے 100بااثر افراد میں شامل ہے،فیصلہ سننے کے بعد گرو گرمیت نے عدالت سے باہر جانے سے انکار کردیا، جس پر اسے گھسیٹ کر عدالت سے لے جایا گیا ۔ سما عت کے موقع پر ملزم کے وکیل نے سزامیں کمی کیلئے گرمیت کی صحت خرابی کی آڑ لیتے ہوئے کہا گرمیت کی صحت خراب ہے اس لیے سزا کم کر دی جائے۔گرو گرمیت سنگھ کے سیکڑوں حامی فیصلہ سننے کیلئے روہتک پہنچے تھے۔سماعت کے موقع پر روہتک کی جیل کو سیکورٹی اہلکاروں نے گھیر رکھا تھا جبکہ سماعت کیلئے جج کو بھی انتہائی سیکورٹی میں لایا گیا، اس موقع پرسرسا میں کرفیو نافذ تھا ، لوگوں کے اجتماع پر پابندی لگادی گئی تھی ۔ روہتک میں فوج کی23 کمپنیوں کو اسٹینڈ بائی رکھا گیا ۔دوسری جانب گرو گرمیت کے حامیوں کیخلاف کریک ڈاون جاری ہے،اب تک ہریانا میں فسادات کے الزام میں 900سے زائد افراد کو حراست میں لیا گیاہے جبکہ ہریانہ کے علاقے سرسا میں گرو کے پیروکاروں نے احتجاج کرتے ہوئے کئی گاڑیوں کو نذر آتش کردیا، ادھر پنجاب کے وزیر اعلی امریندر سنگھ نے عدالت کے فیصلے کا خیر مقدم کیا ہے۔

مزید : صفحہ آخر