ٹرمپ پالیسی پر شدید تحفظات ہیں ، پارلیمنٹ عوام اور دوست مماک کو اعتماد میں لینگے : خواجہ آصف

ٹرمپ پالیسی پر شدید تحفظات ہیں ، پارلیمنٹ عوام اور دوست مماک کو اعتماد میں ...

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں)وزیر خارجہ خواجہ آصف نے کہا ہے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی افغانستان اور پاکستان کے حوالے سے نئی پالیسی پر ہمیں شدید تحفظات ہیں اس معاملے پر پارلیمنٹ کو اعتماد میں لینے کے بعد چین اور تمام دوست ممالک کو اعتماد میں لیں گے، میڈیا سے گفتگو میں انکا مزید کہنا تھا خطے میں پاکستان کے کردار کو کسی صورت نظرانداز نہیں کیا جا سکتا ، امریکہ کی پالیسی پر پاکستان کے دوست ممالک کو بھی شدید تشویش ہے جو بھی حکومت فیصلہ کرے گی وہ عوام کیساتھ شیئر کریں گے، جبکہ امریکی صدر کے الزامات پر قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس میں دوبارہ جائزہ لیں گے۔ ادھرچیئرمین سینیٹ میاں رضا ربانی کی زیرصدارت سینیٹ کی پورے ایوان پر مشتمل کمیٹی کے اجلاس کے دوران امریکی صدر کی جنوبی ایشیا و افغان پالیسی سے متعلق پالیسی گائیڈ لائنز ڈرافٹ کا جائزہ لیا گیا۔اس موقع پر وزیر خارجہ خواجہ آصف نے اجلاس کو ان کیمرا کرنے کی درخواست کی جس کے بعد پورے ایوان پر مشتمل کمیٹی کے اجلاس کو ان کیمرا کردیا گیا۔اجلاس میں وزیر خارجہ نے ایوان کو بتایا کہ بدھ کو قومی اسمبلی کے اجلاس کے بعد قومی سلامتی کمیٹی کا دوبارہ اجلاس ہوگا، جس میں امر یکی صدر کے بیان کے بعد کی صورتحال کا جائزہ لیں گے، دوران اجلاس سینیٹر مشاہد حسین سید نے ذیلی کمیٹی کی تیار پالیسی گائیڈ لائنز پر ایوان کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا امریکی الزامات کے بعد فوری ردعمل کیلئے مستقل بین الوزارتی ٹاسک فورس بنانا ہوگی اور پارلیمانی سفارتکاری کو ملک کے قومی مفاد کیلئے استعال کیا جائے۔ ٹرمپ کی افغان پالیسی کے اعلان کے بعد امریکی وزیر خارجہ ریکس ٹیلرسن کے بیانات بھی مثبت نہیں آئے جس کے بعد پاکستان کو دوستانہ دارالحکومت بیجنگ، انقرہ اور ماسکو سے رابطہ کرنا چاہیے۔ایران، وسطی ایشیا، چین کو نکال کر، بھارت کو شامل کرنے سے کام نہیں چلے گا، پاکستان کو ترکی، چین اور روس کیساتھ مل کر علاقائی ردعمل دینا چاہیے۔ امریکہ سے پاکستان کو ملنے والے فنڈ سے متعلق حقائق کی شیٹ پر کام کیا جائے کہ امریکہ نے حقیقت میں ہمیں کتنے فنڈز دیے، اخراجات کی ادائیگی بھی اتحادی سپورٹ فنڈ میں ڈالی گئی، ہم نے جتنا نقصان اٹھایا وہ تو اس امریکی فنڈ میں شامل نہیں۔سینیٹر مشاہد حسین نے کہا وزیر خارجہ کو موجودہ صورتحال میں امریکہ نہیں جانا چاہیے، حکومت نے اس سلسلے میں درست فیصلہ کیا ہے۔

خواجہ آصف

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر