وہ آدمی جس کے پاس دنیا میں سب سے زیادہ فحش فلمیں ہیں، انٹرنیٹ پر ڈالیں تو ایسا کام ہوگیا کہ دنیا کا نظام ہی درہم برہم ہوگیا

وہ آدمی جس کے پاس دنیا میں سب سے زیادہ فحش فلمیں ہیں، انٹرنیٹ پر ڈالیں تو ایسا ...
وہ آدمی جس کے پاس دنیا میں سب سے زیادہ فحش فلمیں ہیں، انٹرنیٹ پر ڈالیں تو ایسا کام ہوگیا کہ دنیا کا نظام ہی درہم برہم ہوگیا

  


سان فرانسسکو(نیوز ڈیسک)فحش فلموں کی لت نشے کی طرح ہے جسے پورا کرنے کے لئے بعض لوگ یہ شرمناک فلمیں اپنے پاس جمع کرنا شروع کر دیتے ہیں تا کہ جب جی چاہے دیکھ سکیں۔ ماضی میں اس مقصد کے لئے سی ڈی اور فلیش ڈرائیو استعمال ہوتی تھی لیکن اب لوگوں نے اس کام کے لئے ’کلاﺅڈ سٹوریج‘ کا استعمال بھی شروع کر دیا ہے۔ کلاﺅڈ سٹوریج کو استعمال کرتے ہوئے کہیں سے بھی کمپیوٹر اور سمارٹ فون کے ذریعے ایک مشترکہ سٹوریج سسٹم میں ڈیٹا منتقل کیا جا سکتا ہے۔ بس یہی کام ایک ایسے صارف نے بھی شروع کر دیا جسے فحش فلمیں جمع کرنے کا جنون کی حد تک شوق تھا، لیکن بدقسمتی یہ ہوئی کہ اس کے شوق نے ایمزون کے کلاﺅڈ سٹوریج کا بیڑہ غرق کر دیا۔ عام صارفین کے لئے یہ سٹوریج اپنی بے پناہ گنجائش کی وجہ سے لا محدود ہوتا ہے لیکن اس صارف نے فحش فلموں کی اتنی بڑی تعداد سٹور کی کہ یہ لامحدود کلاﺅڈ سٹوریج بھی کم پڑگیا۔

’جو نوجوان انٹرنیٹ پر فحش فلمیں دیکھتے ہیں وہ۔۔۔‘ ماہرین نے خطرے کی گھنٹی بجادی، ایسا نقصان بتادیا جو آپ نے کبھی سوچا بھی نہ ہوگا، جان کر انسان فوری توبہ کرلے

سوشل میڈیا ویب سائٹ ریڈٹ پر یہ صارف Beaston02 کے نام سے سامنے آیا ہے۔ اس کا کہنا ہے کہ وہ جاننا چاہتا تھا کہ آخر ان لمیٹڈ کلاﺅڈ سٹوریج کی حد کیا ہے۔ ایمزون نے جون کے مہینے میں لامحدود کلاﺅڈ سٹوریج کی پیشکش ختم کردی تھی اور سوشل میڈیا پر یہ بات گردش کررہی ہے کہ اس کی اصل وجہ یہی Beaston02نامی انٹرنیٹ صارف بنا ہے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق اس شخص نے کلاﺅڈ سٹوریج پر ایک پیٹابائٹ (10 لاکھ جی بی) کی فحش فلمیں سٹور کیں۔ اس مقصد کیلئے اس نے ایک سافٹ ویئر کوڈ استعمال کیا تھا جو مختلف ویب سائٹوں سے فلمیں اور ویب کیم پر پیش کئے جانے والا مواد اٹھاتا تھا اور اسے خود کار طریقے سے ایمزون کے کلاﺅڈ سٹوریج میں منتقل کرتا رہتا تھا۔ اس صارف نے لاکھوں جی بی کا فحش مواد JITHUB سٹوریج کے نام سے انٹرنیٹ پر بھی فراہم کردیا ہے، جبکہ بہت سے دیگر انٹرنیٹ صارف بھی اس کے ساتھ مل گئے ہیں اور ان سب نے مل کر ’پیٹابائٹ پورن پراجیکٹ‘ کے نام سے فحش مواد کو سٹور کرنے کے لئے ایک نیا پراجیکٹ شروع کردیا ہے۔ یہ فحش فلمیں اتنی بڑی تعداد میں ہیں کہ اگر ایک، ایک کر کے چلائی جائیں تو 300 سال میں بھی ختم نہیں ہوں گی۔

مزید : ڈیلی بائیٹس