پی آئی اے کے پنشنرز13سالوں سے نظر انداز ، وزیراعظم ریٹائرڈ ملازمین کی حالت زار کی بہتری کے لئے اقدامات کریں: تسنیم جمال

پی آئی اے کے پنشنرز13سالوں سے نظر انداز ، وزیراعظم ریٹائرڈ ملازمین کی حالت ...
پی آئی اے کے پنشنرز13سالوں سے نظر انداز ، وزیراعظم ریٹائرڈ ملازمین کی حالت زار کی بہتری کے لئے اقدامات کریں: تسنیم جمال

  


نیویارک(ڈیلی پاکستان آن لائن)پاکستان انٹرنیشنل ائیرلائنز ریٹائرڈ ایمپلائزایسوسی ایشن(پیارے) کی صدر برائے امریکہ و کینیڈا تسنیم جمال نے کہا ہے کہ قومی ائر لائن کے پنشنرز کو گذشتہ 13سالوں سے مسلسل نظر انداز کیا جا رہا ہے جبکہ ائر لائن کی جانب سے دی جانے والی رقم سے پی آئی اے کے ریٹائرڈ ملازمین ڈھنگ سے اپنا گھر بھی نہیں چلاسکتے۔ ان کا کہنا تھا کہ پنشنرز کو دی جانے والی رقم وفاقی حکومت کی جانب سے پنشن کے لئے مقررہ کردہ کم سے کم معیار پر بھی پورا نہیں اترتی جبکہ انتطامیہ وعدوں کے باوجود ان کی حالت زار پر توجہ نہیں دیتی۔ان کا کہنا تھا کہ اس رقم سے پینشنر یوٹیلٹی بل بھی ادا نہیں کرسکتے۔انہوں نے وزیراعظم شاہد خاقان عباسی سے درخواست کی ہے کہ ریٹائرڈ ملازمین کی فلاح پر توجہ دی جائے تاکہ وہ دیگر ریٹائرڈ سرکاری ملازمین کی طرح بہتر زندگی گزار سکیں۔

پی آئی اے کے ریٹائرڈ ملازمین کے ایک وفد سے بات کرتے ہوئے تسنیم جمال نے کہا کہ قومی ائرلائن پی آئی کو دنیا کی بہترین ائر لائن بنانے کے لئے اس کے ملازمین دوران ملازمت انتھک محنت کرتے ہیں،لیکن ریٹائرڈ منٹ کے بعد ان کی خدمات کو نظر انداز کر دیا جاتا ہ۔ بدقسمتی سے گذشتہ13سالوں سے متعلقہ افراد نے قومی ائر لائن کے ریٹائرڈ ملازمین کی حالت زار پر کسی قسم کی توجہ نہیں دی۔پی آئی اے کے ریٹائرڈ ملازمین نے انتظامیہ سے اپنی پنشن میں اضافے کا مطالبہ بھی کیا مگر اسے نظر انداز کردیا گیا ، اس قبل انتظامیہ نے پنشنرز کے مسائل حل کرانے کی یقین دہانی کرائی تھی مگر متعلقہ تاریخ تک خاطر خواہ اقدامات نہیں اٹھائے گئے۔ پی آئی کے ملازمین کو ان کی خدمات کے اعتراف میں ریٹائرڈمنٹ کے بعد ماہانہ معمولی پنشن دی جاتی ہے جس سے ایک بھی یوٹیلٹی بل ادا نہیں ہوسکتا جبکہ13سالوں سے اس میں اضافہ بھی نہیں کیا گیا۔اگر پی آئی اے پنشن میں اضافہ بھی کردے تو اس کا قومی ائر لائن کے فنڈز پر اثر نہیں پڑے گا کیوں کہ ’’ پی آئی اے پنشن فنڈ‘‘ اکاؤنٹس میں ابھی بھی کروڑوں روپے موجود ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ فنڈ ملازمین کی جانب سے قائم 1976ء میں قائم کیا گیا تھا ۔تسنیم جمال نے کہا کہ وفاقی حکومت کی جانب سے مقررہ کی گئی پنشن کی کم سے کم رقم بھی پی آئی اے کے ملازمین کو نہیں دی جارہی، اب وقت آگیا ہے کہ متعلقہ حکام پی آئی اے کے ملازمین کی حالت زار کا نوٹس لیں۔

مزید : قومی