محبت کی شادی کرنے والی لڑکی کی عدالت پیشی،والد نے گلے لگا لیا

محبت کی شادی کرنے والی لڑکی کی عدالت پیشی،والد نے گلے لگا لیا

  

لاہور(نامہ نگار)والد کی درخواست پر محبت کی شادی کرنے والی لڑکی کی عدالت پیشی ،والد نے بیٹی کو معاف کرتے ہوئے گلے لگا لیا درخواست گزار صدیق نے اپنے وکیل کی وساطت سے بیٹی کی بازیابی کے لئے درخواست دائر کررکھی تھی ،عدالت کے حکم پر 18 سالہ فاطمہ کو غازی آباد پولیس نے لڑکی اور اس کے خاوند کو پیش کیا، لڑکی نے عدالت کو بتایا کہ اس نے فیضان حیدر سے پسند کی شادی کی اور اس کو کسی نے اغواء نہیں کیا جبکہ فیضان حیدر نے کہا کہ لڑکی کے والد صدیق جان سے مارنے کی دھمکیاں دے رہے ہیں، کمرہ عدالت میں لڑکی کے باپ نے اسے گلے لگا لیا اور لڑکی کو دعائیں دیں والد کا کہنا تھا میری بیٹی مجھے چار دن بعد ملی ہے، میں اپنی بیٹی کی رائے جاننا چاہتا تھا، س کے بعدایڈیشنل سیشن جج ابہر گل خان نے لڑکی کو خاوند کے ساتھ جانے کی اجازت دے دی ۔عدالت نے غازی آباد تھانے کے ایس ایچ او کو شادی شدہ جوڑے کوتحفظ فراہم کرنے کا حکم بھی دیا ہے۔

مزید :

علاقائی -