بلدیہ مظفرآباد عوام کے اعتماد پر پورا اترنے میں ناکام ہوگئی

بلدیہ مظفرآباد عوام کے اعتماد پر پورا اترنے میں ناکام ہوگئی

  

مظفرآباد( وقائع نگار خصوصی)بلدیہ مظفرآباد دارالحکومت کے عوام کے اعتماد پر پورا اترنے میں ناکام ،سیاسی وابستگیوں اور سفارشی کلچر نے دارالحکومت کے اہم ترین ادارہ کو تباہی کے دھانے پر پہنچا دیا۔ بلدیہ مظفرآباد میں اہم ترین انتظامی آسامیوں پر جونیئر آفیسر کرنٹ چارج بنیادوں پر تعینات کئے گئے ہیں جو ادارے کا نظم و نسق چلانے میں ناکام ہو چکے ہیں اور ان کی گرفت انتہائی کمزور ہے۔ چیف آفیسر کی کلیدی آسامی پر خلاف میرٹ جس افسر کو تعینات کیا گیا ہے وہ گریڈ سولہ کا ملازم ہے جبکہ یہ آسامی گریڈ 18کی ہے۔ اسی طرح دوسری آسامیوں پر بھی سفارشی بنیادوں پر تعیناتیاں کی گئی ہیں جس کے نتیجہ میں ادارہ کی کارکردگی بری طرح متاثر ہو رہی ہے۔ جونیئر ترین افسران کو کلیدی عہدے دے کر ادارے کا بیڑہ غرق کر دیا گیا ہے اور شہر کے اندر صفائی و ستھرائی سمیت تمام امور متاثر ہیں ۔ اہلیت نہ ہونے کے باعث کلیدی عہدوں پر تعینات افسران ماتحت عملہ سے کام لینے سے قاصر ہیں اور ایسے افسران کو کام کاج کا علم ہی نہیں۔ اس وقت بلدیہ مظفرآباد کی کارکردگی پر سب سے زیادہ تنقید ہو رہی ہے۔ اور حکومت کی بدنامی ہو رہی ہے۔ شہریوں کی طرف سے بلدیہ مظفرآباد میں تواتر کے ساتھ اصلاح و احوال کے مطالبات کئے جا رہے ہیں۔ واضح رہے بلدیہ مظفرآباد انتہائی مستحکم ادارہ ہے اور اس کے پاس معقول وسائل ہیں ۔ اس ادارہ کو چیف سیکرٹری آزاد کشمیر کی طرف سے ضرورت سے زیادہ افرادی قوت بھی مہیا کی گئی ہے۔ حال ہی میں بلدیہ کو صفائی و ستھرائی کے لیے 70ایڈھاک آسامیاں مہیا کی گئی ہیں۔ لیکن شہر کے اندر بلدیہ کا وجود نظر نہیں آ رہا ۔ اس ادارہ کے پاس جدید مشینری بھی دستیاب ہے۔ لیکن وسائل کا درست استعمال کرنے والا کوئی نہیں۔ شہریان مظفرآباد کی طرف سے چیف سیکرٹری سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -