ہمسائیوں کے گھر رکھا قربانی کا گوشت کھانے سے محنت کش جاں بحق،ورثا کا گوشت میں زہر ملانے کا الزام, پولیس نے مقدمہ درج کر لیا

ہمسائیوں کے گھر رکھا قربانی کا گوشت کھانے سے محنت کش جاں بحق،ورثا کا گوشت ...
 ہمسائیوں کے گھر رکھا قربانی کا گوشت کھانے سے محنت کش جاں بحق،ورثا کا گوشت میں زہر ملانے کا الزام, پولیس نے مقدمہ درج کر لیا

  

لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن)گرین ٹاﺅن کے علاقہ میں ہمسائیوں نے قربانی کے گوشت میں زہر ڈال کر واپس بھجوادیا جس کے کھانے سے 4 بچوں کا باپ چل بسا،پولیس نے لاش اپنی تحویل میںلے کر پوسٹ مارٹم کے لیے بھجواکر مقدمہ درج کر لیا۔

تفصیلات کے مطابق گرین ٹاﺅن 1نمبربھٹے کا رہائشی35سالہ شہزاد بخاری جوکہ پھیری لگا کے اپنے چار بچوں جن میں ایک بیٹی اور تین بیٹے ہیں کا پیٹ پالتا تھا نے اپنے ہمسائیوں کے گھرقربانی کا گوشت رکھوا یا ہوا تھا جس کو واپس لانے کے لیے اپنی بیٹی کو بھیجا جس پر پڑوسی نے ان کو کافی برا بھلاکہا اور گوشت واپس کردیا جس پر مقتول گھرسے باہر آگیا اور ان دونوں گھروں کی آپس میں کافی دیر لڑائی جاری رہی جس پر محلے داروں نے مل کر ان کی آپس میں صلح کروادی ۔شہزاد بخاری نے قربانی کا گوشت پکوا کر کھایا تو اس کی طبیعت خراب ہوگئی جسے طبی امداد کے لیے مقامی ہسپتال لے جایا گیا جہاں وہ چل بسا ۔اس واقع کی اطلاع ملتے ہی پولیس نے موقع پر پہنچ کر لاش اپنی تحویل میںلے کر پوسٹ مارٹم کے لیے بھجوادیا۔پولیس نے بتایا کہ مقتول کے بھائی نے کہا کہ ان کے ہمسائیوں نے قربانی کے گوشت میں زہر ملا دیا تھا جس کی وجہ سے شہزاد بخاری کی موت واقع ہوئی تاحال پولیس نے مقتول کے بھائی کی مدعیت میںملزمان کے خلاف قتل کی دفعات لگا کر مقدمہ درج کرکے ملزمان کی تلاش شروع کردی جبکہ وہ اپنے گھر کو تالا لگا کر فرار ہوگئے ہیں۔

مزید :

جرم و انصاف -