لڑکی کی جنس تبدیلی کیلئے درخواست پرسپیشل میڈکل بورڈ بنانے کا حکم

   لڑکی کی جنس تبدیلی کیلئے درخواست پرسپیشل میڈکل بورڈ بنانے کا حکم

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائی کورٹ کے مسٹر جسٹس جواد حسن نے لڑکی کی جنس تبدیل کروا کے لڑکا بننے کے لئے دائر درخواست پرسپیشل میڈکل بورڈ تشکیل دینے کا حکم دے دیا،عدالت نے آئندہ سماعت پر درخواست گزار کے تمام ٹیسٹوں کی رپورٹ طلب کرلی ہے،فاضل جج نے دوران سماعت ریمارکس دیئے کہ میڈیکل بورڈ تعین کرے کہ صبا لڑکا بن سکتی ہے یا نہیں،کیس کی سماعت شروع ہوئی تودرخواست گزار کے وکیل نے کہا کہ درخواست گزار لڑکی نہیں ٹرانسجینڈر ہے،جس پر فاضل جج نے کہا کہ شناختی کارڈ پر فی میل لکھا ہوا ہے،جس پر وکیل نے کہا کہ صبا کے مختلف ٹیسٹ سامنے آئے ہیں جس سے وہ ٹرانسجینڈر ثابت ہوتی ہے،درخواست گزار صبا کی طرف سے موقف اختیار کیا گیاہے کہ وہ سیالکوٹ میں چودھری محمد شریف کے گھر لڑکی کی حیثیت سے پیدا ہوئی، درخواست گزار کی عمر 30 برس ہے، شروع سے ہی اس میں مردانہ خصوصیات کا ظاہر ہونا شروع ہوگئی تھیں،عدالت سے استدعاہے کہ پنجاب حکومت کو جنس تبدیل کرنے کے حوالے سے احکامات جاری کئے جائیں، عدالت نے مذکورہ بالاحکم کے ساتھ کیس کی مزید سماعت آئندہ تاریخ پیشی تک ملتوی کردی۔

جنس تبدیلی

مزید :

صفحہ آخر -