بیٹیوں کی تعلیم میں رکاوٹ بننے پربیوی شوہر کیخلاف عدالت پہنچ گئی

بیٹیوں کی تعلیم میں رکاوٹ بننے پربیوی شوہر کیخلاف عدالت پہنچ گئی

  

لاہور(نامہ نگارخصوصی) بچیوں کی تعلیم میں رکاوٹ بننے اور انہیں محبوس رکھنے کے الزام میں خاتون نے اپنے شوہر کے خلاف لاہور ہائیکورٹ میں درخواست دائر کردی،یہ درخواست بوریوالہ کی رہائشی نادیہ کوثر نے اپنے بچوں کی بازیابی اور بچوں کی تعلیم میں رکاوٹ بننے والے اپنے شوہر کے خلاف دائر کی ہے جس میں ایس ایچ او تھانہ ماڈل ٹاؤن بوریوالہ اور شوہر محمد طارق کو فریق بنایا گیا ہے،درخواست گزار کا موقف ہے کہ محمد طارق سے شادی کے بعد اس کی دو بیٹیاں اور دو بیٹے پیدا ہوئے، دونوں بیٹیاں عظمیٰ ناز اور فائزہ اپنی تعلیم جاری رکھنا چاہتی ہیں،مگر باپ اپنی بیٹیوں کو مزید تعلیم نہیں دلوانا چاہتا، عظمیٰ ناز نے میٹرک میں 96 فیصد اور فائزہ نے نویں جماعت میں 86 فیصد نمبر حاصل کئے ہیں، بیٹیوں کو اعلیٰ تعلیم دلوانے کے معاملے پر شوہر نے درخواست گزار کو تشدد کا نشانہ بنایا، شوہر محمد طارق نے 21 اگست کو تشدد کر کے گھر سے نکال دیا اور بچوں کو حبس بے جا میں رکھا ہوا ہے، شوہر کے ظالمانہ اور سخت مزاج کے سبب بچیوں کی تعلیم اور زندگی کو خطرہ ہے، عدالت سے استدعاہے کہ چاروں بچوں کو باپ کی قید سے آزاد کروا کر درخواست گزار کے حوالے کرنے کاحکم دیا جائے۔

بیٹیوں کی تعلیم

مزید :

صفحہ آخر -