سرینگر، ساتویں محرم کے جلوس پر بھی پابندی عائد، فورسز کا عزاداروں پر لاٹھی چارج

سرینگر، ساتویں محرم کے جلوس پر بھی پابندی عائد، فورسز کا عزاداروں پر لاٹھی ...

  

سری نگر(این این آئی) بھارت کے زیر تسلط جموں وکشمیر میں بھارتی پولیس نے سرینگر میں کشمیریوں کو ساتویں محرم کا روایتی جلوس نکالنے سے روکنے کے لئے  طاقت کا وحشیانہ استعمال کیا۔ کشمیرمیڈیا سروس کے مطابق سینکڑوں لوگ سات محرم کو روایتی جلوس نکالنے کے لئے شہر کے علاقے حسن آباد رعنا واری میں اکٹھے ہوئے اور بوٹہ راج محلہ سے کاٹھی دروازے تک مارچ کرنے کی کوشش کی۔ عینی شاہدین نے میڈیا کو بتایا کہ جب عزادار دھرم شالہ چوک تک پہنچے تو وہاں بڑی تعداد میں تعینات بھارتی پولیس اہلکاروں نے عزاداروں پر آنسو گیس اور لاٹھی چارج کا بے دریغ استعمال کیا۔ ایک عینی شاہد شبیر حسین نے بتایا کہ پولیس اہلکاروں نے عزاداروں پر طاقت کے استعمال کے بعد انہیں واپس حسن آبادچوک کی طرف جانے پر مجبور کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ پولیس کی یہ کارروائی بلا جواز تھی کیونکہ عزادار انتہائی پر امن طورپر کاٹھی دروازہ کی طرف بڑھ رہے تھے اور صرف اسلامی اور مذہبی نعرے بلند کر رہے تھے۔ ان تمام نے ماسک پہن رکھے تھے اور سماجی فاصلہ برقراررکھا ہوا تھا اور انہوں نے کسی قسم کی کوئی اشتعال انگیزی نہیں کی۔ ہر سال ساتویں محرم کو سرینگر شہر کا آخری اہم جلوس نکالا جاتا ہے کیونکہ بھارتی قابض انتظامیہ نے 23برس قبل آٹھ اور دس محرم الحرام کے جلوسوں پر پابندی عائد کردی تھی۔

جلوس پابندی

مزید :

صفحہ آخر -