حکمت کی باتیں 

حکمت کی باتیں 

  

٭یہ دنیا بھی عجیب جگہ ہے یہاں جاہل اور کم علم لوگ اپنے آپ کو عالم سمجھتے بھی ہیں اور فخریہ طور پرکہلواتے بھی ہیں۔ دوسری جانب حقیقی عالموں پر زندگی یہ راز آشکار کر دیتی ہے کہ وہ تمام عمر کچھ بھی تو نہیں جان پائے! ٭نا اہل اور بدعنوان حکمرانوں کے اقتدار کی مدّت' عوام کی بزدلی، جہالت اور خود اْن کی اپنی بداعمالیوں کے برابر ہوتی ہے۔

٭لگ بھگ ایک ارب سال تک زمین سے سینکڑوں میل نیچے انتہائی وزن اور شدید حدت برداشت کرنے والا معمولی کوئلہ بالآخر بیش قیمت ہیرا بن جاتا ہے،جسے بادشاہ اپنے تاج کی زینت بنانے میں فخر محسوس کرتے ہیں۔کسی انسان کی شخصیت بھی اْس وقت تک بیش قیمت نہیں ہوتی جب تک کہ اْس نے طویل عرصہ تک شدید مشکلات کا بوجھ نہ اْٹھایا ہو اور تجربات کی بھَٹی کی تپش نہ برداشت کی ہو۔ تن آسانی کے عادی شخص کو عظمت کے خواب نہیں دیکھنے چاہئیں۔

٭یہ سچ ہے کہ عموماً طاقتور اپنے سے کمزور کا استحصال کرتا ہے مگر یہ بھی سچ ہے کہ ظالم کو ظالم بنانے میں دوسرا بڑا ہاتھ خودمظلوم کا اَپنا ہوتا ہے۔ اگر اِرادہ مصمم ہو، آپس میں اَخوْت ہو، اللہ پر بھروسا ہو تو تمام تر ناتوانی کے باوجود خوف و جبرکے تسلط سے چھٹکارا حاصل کیا جا سکتا ہے۔

مزید :

ایڈیشن 1 -