اشیاء خورونوش کی بیرون ملک سمگلنگ کی روک تھام یقینی بنانے کی ہدایت

 اشیاء خورونوش کی بیرون ملک سمگلنگ کی روک تھام یقینی بنانے کی ہدایت

  

 ملتان(نیوز رپورٹر)فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے ڈائیریکٹوریٹ جنرل آف انٹیلی جنس اینڈ انوسٹی گیشن کسٹمز اسلام آباد(بقیہ نمبر28صفحہ6پر)

 اور چیف کولیکٹر کسٹمز بلوچستان کوئٹہ اور چیف کولیکٹر کسٹمز نارتھ اسلام آباد کو ہدایات جاری کی ہیں کہ وزیر اعظم کے احکامات کی تعمیل میں کھانے کی اشیاء کی ملک سے باہر سمگلنگ کی روک تھام کو یقینی بنائے۔ وزیراعظم نے یہ احکامات گندم، آٹا، چینی، مکئی، میدہ، پولٹری، پھل، سبزیاں اور مویشی کی ملک میں پیدا ہونے والی کمی کے بعد جاری کئے ہیں.وفاقی حکومت نے کووڈ 19 سمگلنگ کی روک تھام آرڈینینس 2020 متعارف کرایا ہے تا کہ قانون نافذ کرنے والے اداروں کو بااختیار بنا کر اسمگلنگ کی روک تھام کو یقینی بنایا جا سکے۔ایف بی آر نے مزید ہدایا ت جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان کسٹمز سمگلنگ باالخصوص کھانے کی اشیاء کی سمگلنگ کو کنٹرول کرنے کے لئے تمام وسائل بروئے کار لائے اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کے ساتھ مل کر برآمدی اشیاء کی کلیرنس کے وقت ہوشیار رہیں۔ ایف بی آر نے ہر پندرہ ایام کے بعد ڈائیریکٹوریٹ جنرل آف انٹیلیجنس اینڈ انوسٹی گیشن کسٹمز اسلام آباد اور چیف کولیکٹر کسٹمز بلوچستان،کوئٹہ اور چیف کولیکٹر کسٹمز نارتھ اسلام آبادکو اٹھائے گئے  اقدامات سے ایف بی آر ہیڈکوارٹر کو آگاہ کرنے کے احکامات بھی جاری کئے ہیں۔

ہدایت

مزید :

ملتان صفحہ آخر -