ثانیِ مصطفیٰ نہ کوئی ثانیِ حسینؑ

ثانیِ مصطفیٰ نہ کوئی ثانیِ حسینؑ
ثانیِ مصطفیٰ نہ کوئی ثانیِ حسینؑ

  

توحید پر محیط ہے قربانیِ حسینؑ

سجدے میں ہے جڑی ہوئی پیشانیِ حسینؑ

میدانِ کربلا میں شریعت بکھر گئی

ترتیب دے رہی ہے پریشانیِ حسینؑ

لاشوں کے درمیان ہیں تنہا کھڑے ہوئے

سامانِ حق ہے بے سرو سامانیِ حسینؑ

سب سر کشوں کو اپنے لہو میں ڈبو دیا

باطل کو غرق کر گئی طغیانیِ حسینؑ

نیزے پہ چڑھ کے سر نے بلندی کا حق لیا

قائم رکھی اجل نے بھی سلطانیِ حسینؑ

آنے نہ دے گی اپنی صفوں میں نئے یزید

دروازے پر کھڑی ہے نگہبانیِ حسینؑ

رونق تمام نانا نواسے کے دم سے ہے

ثانیِ مصطفیٰ نہ کوئی ثانیِ حسینؑ

مظفر وارثی

                Toheed Par Muheet Hay Qurbaani  e  HUSSAIN

           Sajday Men Hay Jarri Hui Peshaani  e  HUSSAIN

                 Maidaan  e  Karbalaa Men Shariyyat Bikhar Gai

                  Tarteeb Day Rahi Hay Pareshaani  e  HUSSAIN

                 Laashon K Darmiaan Hen Tanha Kharray Huay

    Samaan  e  Haq Hay Be Sar  o  Samaani  e  HUSSAIN

                    Sab Sarkashon Ko Apnay Lahu Men Dasbo Dia

           Baatil Ko Gharq Kar Gai Tughyaani  e  HUSSAIN

                 Naizay Pe Caharr K Sar Nay Bulandi Ka Haq Lia

             Qaaim Rakhi Ajal Nay Bhi Sultaani  e  HUSSAIN

                  Aanay Na Day Gi Apni Safon Men Naey Yazeed

Darwaazay Par Kharri Hay Nigehbaani  e  HUSSAIN

Ronaq Tamaam NANA NAWASAY K Dam Say Hay

                     Saani   e  MUSTAFA Na Koi Saani  e  HUSSAIN

                                                                                                                                             Muzaffar Warsi

مزید :

شاعری -سنجیدہ شاعری -