اقوام متحدہ کی عراق میں ایران مخالف گروپ کے کیمپ پر راکٹ حملے کی مذمت

اقوام متحدہ کی عراق میں ایران مخالف گروپ کے کیمپ پر راکٹ حملے کی مذمت

بغداد(آن لائن)اقوام متحدہ نے عراق کے دارالحکومت بغداد کے نواح میں ایران کے حکومت مخالف جلاوطن گروپ پر راکٹ حملے کی مذمت کی ہے اور عراقی حکومت سے کیمپ کے تحفظ اور واقعہ کی تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔العریبہ ٹی وی کے مطابق عراق میں اقوام متحدہ کے ایلچی نیکولے ملدینوف نے جمعہ کو ایک بیان میں کہا ہے کہ کیمپ پر راکٹوں کی بارش سے متعدد افراد ہلاک اور زخمی ہوئے ہیں لیکن انھوں نے ہلاکتوں کی متعین تعداد کا ذکر نہیں کیا۔انھوں نے کہا کہ کیمپ کے مکینوں کو تحفظ مہیا کرنا عراقی حکومت کی ذمے داری ہے۔ اس تازہ واقعہ کی مکمل تحقیقات کی جائے اور اس کے ذمے داروں کو انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے۔اقوام متحدہ کے ایلچی نے عالمی برادری پر زوردیا ہے کہ وہ مجاہدین خلق کو کسی اور ملک میں آباد کرنے کے لیے اپنی کوششیں تیز کرے کیونکہ ان کے بہ قول اسی صورت میں ان کے تحفظ اور سکیورٹی کی ضمانت دی جاسکتی ہے۔ واضح رہے کہ اب تک مجاہدین خلق کے 162 ارکان کو بیرون ملک بسایا جاچکا ہے اور ان میں سے زیادہ تر کو البانیا میں منتقل کیا گیا ہے۔جمعرات کی رات ایرانی حکومت کے مخالف مجاہدین خلق کے کیمپ لبرٹی پر متعدد راکٹ آکر گرے تھے۔ پیرس میں قائم ایرانی حکومت مخالف قومی مزاحمتی کونسل کا کہنا ہے کہ اس راکٹ حملے میں تین افراد ہلاک اور پچاس سے زیادہ زخمی ہوگئے ہیں لیکن عراقی حکومت کا کہنا ہے کہ اس واقعے میں صرف دو افراد زخمی ہوئے ہیں۔

ماضی میں ایران کی حمایت یافتہ عراق کی ایک شیعہ ملیشیا کے لیڈرنے مجاہدین خلق کے کیمپ پر راکٹ حملوں کی ذمے داری قبول کی تھی اور ان کے وہاں سے انخلائ تک مزید حملوں کی دھمکی دی تھی۔ مجاہدین خلق کے مطابق اس سال اب تک کیمپ پر راکٹ حملوں میں دس افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔

مزید : عالمی منظر