مراکش،دہشت گردی کے الزام میں 10افراد کو قید کی سزائیں

مراکش،دہشت گردی کے الزام میں 10افراد کو قید کی سزائیں

مراکش(آن لائن)مراکو کی دہشتگردی سے متعلق کیسوں کے حوالے سے ایک خصوصی عدالت نے 10افراد کو قید کی سزائیں سنا دی ہیں جن میں بعض پر شام اور عراق کیلئے جنگجوؤں کی بھرتی کا الزام ہے،ہے بات سرکاری میڈیا نے گزشتہ روز کہی۔سرکاری ایم اے پی نیوز ایجنسی کا کہنا ہے کہ تین مدعا علیہان جن پر دہشتگردی کی کارروائیاں کرنے کی منصوبہ بندی کا الزام ہے،کو سب سے زیادہ پانچ سال فی کس جیل کی سزا سنائی گئی ہے،اس نے ان ملزمان کی شناخت ظاہر نہیں کی ہے،تاہم کہا ہے کہ ان میں سے ایک دولت اسلامیہ جہادی گروپ کے حلقوں میں لڑ چکا ہے اور اس کی ٹانگ زخمی ہوگئی تھی۔ایجنسی کا کہنا ہے کہ دیگر مدعا علیہان جنہیں عدالت کی جانب سے قید کی سزا سنائی گئی میں ایک کم عمر ملزم شامل ہے،جسے دہشتگردانہ کارروائیوں کی تعریف پر چھ ماہ قید کی سزا سنائی گئی،اسی کیس میں دیگر مدعا علیہان کو دو اور چار سال کے درمیان سزائیں سنائی گئی ہیں۔ستمبر میں حکومت نے دہشتگردی قانون کو سخت کرنے کیلئے ایک مسودہ قانون تیار کیا تھا،جس کا مقصد خاص طور پر لوگوں کو جہادی گروپوں میں شمولیت سے روکنا تھا۔2000سے زائد مراکن باشندے جن میں دوہری شہریت کے افراد بھی شامل ہیں،خیال کیا جاتا ہے کہ شام اور عراق میں جہادی گروپوں کے ساتھ منسلک ہوچکے ہیں۔

مزید : عالمی منظر