جارج ایچ ڈبلیو بش اختتام ہفتہ تک ہسپتال میں رہیں گے،ترجمان

جارج ایچ ڈبلیو بش اختتام ہفتہ تک ہسپتال میں رہیں گے،ترجمان

واشنگٹن (آن لائن)سابق امریکی صدر جارج ایچ ڈبلیو بش اختتام ہفتہ تک ٹیکساس کے ایک ہسپتال میں رہیں گے،جنہیں سانس کی تکلیف کا سامناہے،تاہم ان کے ترجمان نے گزشتہ روز کہا کہ انہیں جلد ڈسچارج کیا جارسکتا ہے۔90سالہ بش کو منگل کو دیر گئے ہوسٹن میتھوڈسٹ ہسپتال میں داخل کرایا گیا تھا،کرسمس کے روز ان کے اہلخانہ نے ان سے ملاقات کی تھی اور ان کے ترجمان جم میگراتھ کا کہنا تھا کہ ان کی حالت بہتر ہورہی ہے۔میگراتھ نے ایک بیان میں کہا کہ صدر بش کی حالت بہتر ہورہی ہے اور ڈاکٹروں نے انہیں ہسپتال سے فارغ کرنے کی تاریخوں پر غور شروع کردیا ہے۔وہ مزید نگرانی کیلئے اختتام ہفتہ تک ہوسٹن میتھوڈسٹ ہسپتال میں رہیں گے۔ترجمان نے قیام میں توسیع کی وجوہات یا ہسپتال سے فارغ کئے جانے کے حوالے سے تفصیلات نہیں بتائی ہیں۔

چار زندہ سابق امریکی صدور میں سے عمر رسیدہ بش جو وہیل چےئر استعمال کرتے ہیں،حالیہ عرصے میں عوامی تقریبات میں نظر نہیں آئے ہیں،ان کا نومبر2012ء میں ہوتھن میتھوڈسٹ ہسپتال میں علاج کیا گیا تھا اور تقریباً2ماہ کے عرصے کیلئے ہسپتال میں داخل رہے تھے۔سابق صدر کی اہلیہ کو تقریباً1سال قبل اسی ہوسٹن ہسپتال میں داخل کرایا تھا۔نمونیا کے مرض میں مبتلا سابق خاتون اول کو جنوری میں ہسپتال سے فارغ کیا گیا تھا۔بش،جو امریکہ کی انتہائی سرکردہ سیاسی شخصیات میں سے ایک ہیں،سابق صدر جارج ڈبلیو بش کے والد ہیں،ان کے ایک اور بیٹے جیب نے گزشتہ ہفتے اعلان کیا تھا کہ وہ 2016ء میں وائٹ ہاؤس کی کوشش کیلئے اپنی بنیاد رکھ رہے ہیں۔

مزید : عالمی منظر